Thursday , September 21 2017
Home / Top Stories / عیسائی تاجر‘ اعلیٰ پولیس عہدیدار کی بیوی کا بے رحمانہ قتل

عیسائی تاجر‘ اعلیٰ پولیس عہدیدار کی بیوی کا بے رحمانہ قتل

ڈھاکہ ۔5جون ( سیاست ڈاٹ کام ) ایک عیسائی تاجر کو آج نامعلوم  تیز دھارہتھیار لہرانے والے افراد نے بنگلہ دیش میں چرچ کے قریب بے رحمی سے قتل کردیا ۔ چند گھنٹے قبل ایک انسداد دہشت گردی پولیس عہدیدار کو مذہبی انتہا پسندوں نے مسلم غالب آبادی والے ملک میں گولی مار کر ہلاک کردیا تھا ۔ اس طرح اقلیتوں اور سیکولر کارکنوں پر اسلام پسندوں کے بے رحمانہ حملوں کا سلسلہ بنگلہ دیش میں جاری ہے ۔ 65سالہ سنیل گومس کرانہ کی ایک دکان میں دوپہر کے وقت شمال مغربی ضلع میں مہلوک پایا گیا ۔پولیس کے سپرنٹنڈنٹ شیامل مکرجی نے اس کی اطلاع دی ۔ حملہ آور گومس کی موت کے فوری بعد فرار ہوگئے ۔ یہ واردات تجارتی مرکز میں دیہات بان پارہ کے چرچ کے قریب پیش آئی ۔ پولیس سپرنٹنڈنٹ مکرجی نے کہا کہ واقعہ کی تفصیلات کا ہنوز علم نہیں ہوسکا لیکن قتل کے بارے میں ملازمین پولیس معلومات جمع کررہے ہیں ۔ گومس کے قتل کا مقصد فوری طور پر معلوم نہیں ہوسکا ۔ دریں اثناء ایک علحدہ واقعہ میں ایک اعلیٰ سطحی بنگلہ دیشی پولیس عہدیدار کی بیوی کو جس نے اسلام پسندوں کے خلاف کئی دھاوے کئے تھے چاقو زنی کے ذریعہ اور گولی مار کر موٹر سیکل سوار حملہ آوروں نے اس کے چھوٹے بیٹے کے روبرو ساحلی شہر چٹگانگ میں قتل کردیا ۔ 33سالہ محمودہ اختر کو بندوق برداروں نے 6:45بجے صبح حملے کا نشانہ بنایا جب کہ وہ اپنے پہلی جماعت کے طالب علم بیٹے کو اسکول کے بس اسٹاپ پر چھوڑنے کیلئے گئی تھی ۔
وزیر داخلہ اسد الزماں خان کمال نے کہا کہ پولیس کو شبہ ہے کہ مذہبی انتہا پسند اس قتل کے پس پردہ ہیں ۔ کمال جو اس ساحلی شہر میں قتل کی واردات کے وقت موجود تھے کہا کہ جے ایم بی کے خلاف بڑے پیمانے پر مہم میں بابل کی بیوی نے نمایاں کردار ادا کیا تھا ۔ بابل نے کئی دھاؤں کی قیادت کی تھی۔وہ سپرنٹنڈنٹ پولیس بابل اختر کی بیوی کی جو اب  ڈھاکہ میں پولیس ہیڈ کوارٹرس پر تعینات ہیں ۔ بابل کو اپریل میں ترقی دی گئی تھی کیونکہ انہوں نے اعلیٰ سطحی عسکریت پسندو ںکو گرفتار کرنے اور ان کے خفیہ اڈوں کو تباہ کرنے میں نمایاں کردار ادا کیا تھا ۔ گذشتہ سال اکٹوبر میں پولیس سربراہ جو فوج سے تعلق رکھتے تھے جماعتجے ایم بی کے  خفیہ ٹھکانوں کو تباہ کیا تھا ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT