Monday , September 25 2017
Home / ہندوستان / غذائی تنازعہ : فوجی کی بیوی کو اُس کا پتہ چلانے کی اجازت

غذائی تنازعہ : فوجی کی بیوی کو اُس کا پتہ چلانے کی اجازت

نئی دہلی 10 فروری (سیاست ڈاٹ کام) دہلی کی ہائیکورٹ نے آج اتفاق کیاکہ ایک بی ایس ایف کے فوجی کی بیوی نے عدالت کے اجلاس پر حبس بیجا کی درخواست پیش کی ہے۔ اِس فوجی نے سوشیل میڈیا پر ناقص معیار کی غذا فوجیوں کو سربراہ کرنے کا الزام عائد کیا تھا۔ اُس کی بیوی نے دعویٰ کیا تھا کہ اُس کے شوہر تیج بہادر یادو کا اُس کا خاندان پتہ چلانے سے قاصر ہے اور گزشتہ 3 دن سے اُس سے کوئی ربط پیدا نہیں ہوا ہے۔ فوجی کی بیوی کی درخواست کی عاجلانہ بنیاد پر سماعت کرتے ہوئے جسٹس بی ڈی احمد اور جسٹس اشوتوش کمار نے کہاکہ اُس کی بیوی کو اپنے شوہر کو تلاش کرنے کی آزادی حاصل ہے۔ فوجی کی بیوی کی جانب سے قانون داں منیش تیواری مقدمہ میں پیروی کررہے تھے۔ اُنھوں نے کہاکہ فوجی کا پتہ معلوم نہیں ہے۔ گزشتہ چند دن سے وہ لاپتہ ہے اِس لئے عدالت کو اِس معاملہ کا جائزہ لینا چاہئے۔ بنچ نے معاملہ کی عجلت کا احساس کرتے ہوئے کہاکہ اگر درخواستگذار کی خواہش ہے تو درخواست کی آج دوپہر ہی سماعت کی جائے گی۔ 9 جنوری کو فیس بُک پر ایک ویڈیو جاری کیا گیا تھا جس میں پانی جیسی دال اور لہسن اور نمک کی چٹنی جلی ہوئی روٹی کے ساتھ فوجیوں کو کھانے کے لئے سربراہ کرنے کا انکشاف ہوا تھا۔اُنھوں نے کہاکہ فوجیوں کو اِسی قسم کی غذا خط قبضہ پر فراہم کی جارہی ہے اور وہ خالی پیٹ پاکستانی فوجیوں کا مقابلہ کرنے پر مجبور ہیں۔

TOPPOPULARRECENT