Saturday , September 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / غریبوں کو ڈبل بیڈ روم کی فراہمی کیلئے اقدامات

غریبوں کو ڈبل بیڈ روم کی فراہمی کیلئے اقدامات

ضلع نظام آباد کیلئے 3600 مکانات کی منظوری
نظام آباد۔13 اکتوبر (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)ریاستی حکومت نے دسہرہ تہوار کے موقع پر ڈبل بیڈ روم مکان کی تعمیر کا آغاز کرنے کا اعلان کرتے ہوئے ضلع نظام آباد کیلئے 3600 مکانات کی منظوری دی ہے اور ہر اسمبلی حلقہ میں 400 مکانات منظور کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اس خصوص میں چند دیہاتوںمیں ماڈل کالونیاں تعمیر کرنے کیلئے بھی فیصلہ کرنے سرکاری اراضیات فراہم نہ ہونے کی صورت میں خانگی اراضیات کو خریدتے ہوئے مکانات کی تعمیر اور میونسپلٹی کے علاقہ میں G+1 اور G+2 مکانات تعمیر اور دیہاتوں میں مثالی کالونیوں کی تعمیر کیلئے اقدامات کا آغاز کرنے کی عہدیداروں کو ہدایت دی ہے۔ ٹی آرایس اقتدار میں آنے کے بعد عوام کو رہائشی مکانات کی تعمیری کے بارے میں گذشتہ دو سال سے اعلانات کررہی ہے اور اس کو عملی جامہ پہنانے کیلئے ضلع کلکٹر اور عہدیداروں کیساتھ حیدرآباد میں اجلاس ہورہے ہیں ۔ اس اجلاس کے بعد اور کاماریڈی ارکان اسمبلی، ارکان پارلیمنٹ اور ضلع کے اعلیٰ عہدیداروں کیساتھ ضلع کے وزیر مسٹر پوچارام سرینواس ریڈی اجلاس کو منعقد کررہے ہیں۔ اسکیم کو ضلع میں بھی شروع کرنے کے امکانات ہیں۔ ضلع میں 175.31 ایکر سرکاری اراضی کی نشاندہی کی گئی ہے۔ نظام آباد اربن حلقہ میں 20 ایکر، آرمور حلقہ میں 49.30 ایکر، بودھن میں 63.05 ایکر، کاماریڈی میں 42.36 ایکر ، نظام آباد رورل حلقہ میں 48.20ایکر، آرمور میں 33.33، بالکنڈہ میں 59.11 ایکر، بودھن رورل میں 101.13 ایکر، بانسواڑہ میں 225.27ایکر، جکل میں 99.92 ، کاماریڈی رورل 37.24 ایکر، یلاریڈی میں 48.14ایکر اراضی کی نشاندہی کرتے ہوئے حکومت کو رپورٹ پیش کی گئی۔ حکومت کی منظوری کے بعد ان اراضیات کے علاوہ دیگر اراضیات کا بھی جائزہ لیا جائیگا۔ اگر یہ اراضیات مکانات کی تعمیر کیلئے قابل نہ ہونے کی صورت میں خانگی اراضیات کو خریدتے ہوئے مکانات کی تعمیر کرنے کے امکانات ہیں۔ ٹی آرایس اقتدار میں آنے کے بعد پہلی مرتبہ تعمیر کئے جانے والے مکانات کو مثالی طور پر تعمیر کرنے کی صورت میں آنے والے 3 سالوں میں اسی طرح مکانات کی تعمیر انجام دینے کے امکانات ہیں۔ اس کے علاوہ اندراماں مکانات کے بلوں کی منظوری بھی دی گئی ہے۔ 2014 ء تک اندراماں مکانات کی تعمیر کی گئی تھی اور ضلع میں 28722 مکانات کے بلوں کی ادائیگی زیر التواء ہے اور ان بلوں کی ادائیگی کیلئے حکومت نے فیصلہ کیا ہے۔ اس کے علاوہ اندراماں مکانات کی تعمیرات ابھی بھی چند مقامات پر جاری ہے اور ان مکانات کی تعمیر کیخلاف ضلع کے عہدیدار اور ایم آر او و دیگر عہدیدار جائزہ لینے کے بعد منظوری ملنے کے امکانات ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT