Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / غریبوں کیلئے فلیٹس ، مسلمانوں کو محرومی کا اندیشہ

غریبوں کیلئے فلیٹس ، مسلمانوں کو محرومی کا اندیشہ

12% تحفظات پر عمل آوری سے قبل فلاحی اقدامات ،اقلیت میں تشویش
حیدرآباد /25 اکتوبر (سیاست نیوز) تلنگانہ کے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے اپنے ایک اہم انتخابی وعدہ کی تکمیل کے طورپر اعلان کیا ہے کہ وجے دشمی تہوار کے موقع پر ریاست کے غریبوں کے لئے دو بیڈ رومس پر فلیٹس کی فراہمی اسکیم کا آغاز ہوگا۔ ان کے اس اعلان سے ریاست کے تمام غریبوں کو خوشی ضرور ہوئی ہے، لیکن اس کے ساتھ ہی مسلمانوں میں خوشی کی بجائے یہ اندیشے بھی پیدا ہو رہے ہیں کہ 12 فیصد تحفظات پر عمل آوری سے قبل ہی اس اسکیم کے آغاز کی صورت میں ان (مسلمانوں) کی ایک قابل لحاظ تعداد ٹی آر ایس حکومت کے اس فلاحی پروگرام کے ثمرات سے محروم ہو جائے گی۔ چیف منسٹر کے سی آر نے اعلان کیا ہے کہ ریاست کے دس اضلاع میں آئندہ آٹھ ماہ کے دوران غریبوں کے لئے 60 ہزار ڈبل بیڈ رومس کے فلیٹس تعمیر کروائے جائیں گے۔ 560 مربع فٹ پر مشتمل ایک فلیٹ کی لاگت 5.04 لاکھ روپئے بتائی گئی ہے۔ مسٹر چندر شیکھر راؤ نے یہ اعلان بھی کیا ہے کہ اس ہاؤزنگ اسکیم کے تحت تلنگانہ کے ملازمین کو 19 فیصد فلیٹس مختص کئے جائیں گے، لیکن مسلمانوں کے لئے 12 فیصد تحفظات کا کوئی تذکرہ نہیں کیا۔ اس صورت میں باور کیا جاتا ہے کہ غریب مسلمانوں کو ممکن ہے کہ چار فیصد حصہ کے مطابق فلیٹس حاصل ہوں گے اور دیگر آٹھ فیصد مستحق مسلمان محروم ہو سکتے ہیں۔ ان حالات میں تلنگانہ کے غریب مسلمانوں کا احساس ہے کہ 12 فیصد تحفظات کے قطعی فیصلہ تک عبوری اقدامات کے طورپر انھیں بھی ان کی آبادی کے تناسب کے مطابق تحفظات کے ساتھ فلیٹس فراہم کئے جائیں۔

TOPPOPULARRECENT