Tuesday , September 26 2017
Home / شہر کی خبریں / غریب اقلیتی افراد کو آٹو رکشا کی فراہمی میں بنکوں کے تعاون سے اتفاق

غریب اقلیتی افراد کو آٹو رکشا کی فراہمی میں بنکوں کے تعاون سے اتفاق

22 اکٹوبر تک درخواستوں کی وصولی ، ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن کا بیان
حیدرآباد۔/9اکٹوبر، ( سیاست نیوز) حیدرآباد و رنگاریڈی میں غریب اقلیتی افراد کیلئے 1000 آٹو رکشاء کی فراہمی سے متعلق اسکیم میں بینکرس نے مکمل تعاون سے اتفاق کیا ہے۔ اس اسکیم کے تحت آٹو رکشا کی مالیت کی 50فیصد رقم اقلیتی فینانس کارپوریشن کی جانب سے فراہم کی جائے گی جبکہ 50فیصد رقم بینک بطور قرض منظور کرے گا۔ اسکیم کا آغاز 2اکٹوبر سے ہوچکا ہے اور 22اکٹوبر تک درخواستیں قبول کی جائیں گی۔ آٹو رکشا کی فراہمی میں بینکوں کے قرض کو یقینی بنانے کیلئے منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن بی شفیع اللہ نے آج مختلف بینکوں کے نمائندوں اور آر ٹی اے عہدیداروں کے ساتھ اجلاس منعقد کیا۔ اجلاس میں تقریباً 10مختلف بینکوں کے نمائندوں نے شرکت کی اور اسکیم کے بارے میں معلومات حاصل کی۔ بی شفیع اللہ نے انہیں اسکیم کی تفصیلات سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ حکومت چاہتی ہے کہ غریب اقلیتی افراد کو معاشی پسماندگی سے اُبھارنے کیلئے آٹو رکشا فراہم کئے جائیں۔ اس سلسلہ میں اگر بینک تعاون کریں تو اسکیم پر کامیابی یقینی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ بینکوں کے نمائندوں نے 50فیصد قرض پر 11فیصد سے زائد سود مقرر کرنے کی تجویز پیش کی۔ طویل مشاورت کے بعد کارپوریشن نے 10.5فیصد شرح سود مقرر کرنے کی خواہش کی جس پر بینکرس نے اتفاق کیا تاہم اس سلسلہ میں قطعی فیصلہ تلنگانہ کی لیڈ بینک اسٹیٹ بینک آف حیدرآباد کی منظوری سے لیا جائے گا۔ بتایا جاتا ہے کہ بہت جلد دوبارہ بینکرس کے ساتھ اجلاس طلب کرتے ہوئے شرح سود کو قطعیت دی جائے گی۔ منیجنگ ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن کے مطابق بینکوں سے کہا گیا ہے کہ وہ انہیں الاٹ کردہ کوٹہ کے مطابق ایک ہی دن میں آٹوز جاری کردیں۔ 50فیصد سبسیڈی کی رقم منتخب امیدوار کے بینک اکاؤنٹ میں منتقل کی جائیگی جبکہ بینک مابقی 50فیصد رقم آٹو ڈیلر کے اکاؤنٹ میں منتقل کریں گے۔ بینکوں سے کہا گیا ہے کہ وہ 11نومبر کو یوم اقلیتی بہبود کے موقع پر تمام آٹوز جاری کریں۔ یوم اقلیتی بہبود تقریب میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی موجودگی میں آٹوز جاری کرنے کا منصوبہ ہے۔ ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی نے عہدیداروں سے کہا کہ وہ اسکیم پر کامیاب عمل آوری کو یقینی بنائیں اور 22اکٹوبر کے بعد 1000 سے زائد درخواستیں وصول ہونے کی صورت میں قرعہ اندازی کے ذریعہ امیدواروں کا انتخاب کیا جائے گا۔ بی شفیع اللہ نے کہا کہ درخواستوں کی وصولی کا مرحلہ مکمل ہونے کے بعد انتخاب کے طریقہ کار کو قطعیت دی جائے گی۔ انہوں نے بتایا کہ شہر اور رنگاریڈی کے بعد دیگر اضلاع میں بھی اس اسکیم کو توسیع دینے کی تجویز ہے۔ بینکرس کے ساتھ منعقدہ اجلاس میں ڈائرکٹر اقلیتی بہبود ایم جے اکبر اور سکریٹری ڈائرکٹر اردو اکیڈیمی پروفیسر ایس اے شکور نے شرکت کی۔

TOPPOPULARRECENT