Sunday , October 22 2017
Home / شہر کی خبریں / غریب خاندانوں میں ملبوسات کی تقسیم کے طریقہ کار کا جائزہ

غریب خاندانوں میں ملبوسات کی تقسیم کے طریقہ کار کا جائزہ

سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل کا دورہ حج ہاوز ، مساجد کو گفٹ پیاکٹس کی تقسیم کا آغاز
حیدرآباد۔ 12 جون (سیاست نیوز) سکریٹری اقلیتی بہبود سید عمر جلیل نے آج حج ہائوز پہنچ کر رمضان المبارک کے موقع پر حکومت کی جانب سے غریب خاندانوں میں کپڑوں کی تقسیم کے طریقہ کار کا جائزہ لیا۔
گریٹر حیدرآباد کے حدود میں 396 مساجد میں فی مسجد 500 کپڑوں کے گفٹ پیاکٹس کی تقسیم 16 جون کو عمل میں آئے گی اور مساجد کمیٹیوں کو کپڑوں کے پیاکٹس حج ہائوز نامپلی سے جاری کئے جارہے ہیں۔ گفٹ پیاکٹس کی مساجد کمیٹیوں کو اجرائی کا آج سے آغاز ہوا ہے۔ گریٹر حیدرآباد کے 24 اسمبلی حلقوں میں ہر کارپوریٹر کو دو اور رکن اسمبلی کو چار مساجد کی سفارش کا اختیار دیا گیا ہے اس کے علاوہ شیعہ و مہدوی مساجد اور یتیم خانوں میں بھی کپڑوں کے گفٹ پیاکٹس تقسیم کئے جائیں گے۔ اس طرح جملہ 420 مساجد اور یتیم خانوں کا انتخاب کیا گیا ہے۔ سکریٹری اقلیتی بہبود نے حج ہائوز میں قائم کردہ گودام کا معائنہ کیا اور صدرنشین وقف بورڈ محمد سلیم سے گفٹ پیاکٹس کی اجرائی کے طریقہ کار کے بارے میں تفصیلات حاصل کیں۔ چیف ایگزیکٹیو آفیسر ایم اے منان فاروقی نے بتایا کہ وقف بورڈ کے 30 ملازمین کو حج ہائوز میں مختلف کائونٹرس پر تعینات کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ اقلیتی فینانس کارپوریشن، کرسچن فینانس کارپوریشن اور اقلیتی بہبود ڈائرکٹوریٹ کے ملازمین کی خدمات بھی حاصل کی گئی ہیں۔ حج ہائوز نامپلی میں مختلف کائونٹرس بنائے گئے ہیں جہاں مساجد کمیٹیاں متعلقہ کارپوریٹر یا رکن اسمبلی کا مکتوب حوالے کرتے ہوئے گفٹ پیاکٹس حاصل کرسکتے ہیں۔ ہر مسجد کے لیے 500 گفٹ پیاکٹس الاٹ کیئے جائیں گے۔ اس کے علاوہ 18 جون کو مذکورہ مساجد میں اجتماعی افطار اور ڈنر کے اہتمام کے سلسلہ میں مسجد کمیٹی کے اکائونٹ میں ایک لاکھ روپئے جمع کیئے جارہے ہیں۔ چیف ایگزیکٹیو آفیسر نے بتایا کہ اگرچہ 16 جون کو پروگرام کے مطابق کپڑوں کی تقسیم عمل میں آئے گی۔ لیکن گفٹ پیاکٹس کی اجرائی کے کائونٹرس 18 جون تک برقرار رہیں گے تاکہ تاخیر سے پہنچنے والوں کو گفٹ پیاکٹس جاری کئے جائیں۔ اضلاع کی مساجد کے لیے ڈائرکٹر اقلیتی بہبود کی جانب سے متعلقہ ضلع کلکٹرس کو گفٹ پیاکٹس روانہ کئے جارہے ہیں۔ سکریٹری ا قلیتی بہبود نے بتایا کہ حکومت نے گزشتہ سال کے مقابلہ اس مرتبہ افطار اور گفٹ پیاکٹس کی تعداد کو دوگنا کردیا ہے۔ گزشتہ سال دو لاکھ گفٹ پیاکٹس تقسیم کئے گئے تھے تاہم اس مرتبہ 4 لاکھ پیاکٹس غریبوں میں تقسیم کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ایسی مساجد کا انتخاب کیا جارہا ہے جہاں غریب خاندانوں کی بستی ہو۔ انہوں نے کہا کہ دیہی علاقوں میں 95 اسمبلی حلقوں میں ہر اسمبلی حلقے سے 4 مساجد کا انتخاب کیا گیا ہے۔ اس طرح ریاست بھر میں جملہ 800 مساجد میں افطار اور کپڑوں کی تقسیم عمل میں آئے گی۔

TOPPOPULARRECENT