Friday , April 28 2017
Home / شہر کی خبریں / غیر قانونی آبرسانی کنکشن اور پائپ لائنس پجرنے سے بھاری نقصان

غیر قانونی آبرسانی کنکشن اور پائپ لائنس پجرنے سے بھاری نقصان

پرانی پائپ لائنس مرحلہ وار تبدیل کی جارہی ہیں، دانا کشور کا بیان

حیدرآباد 16 اپریل (سیاست نیوز) حیدرآباد میٹرو واٹر بورڈ کو غیر قانونی آبرسانی کنکشن اور پائپ لائنس پجرنے کی وجہ آمدنی میں بھاری نقصان ہورہا ہے۔ سال 2009-10 ء میں کرائے گئے ایک سروے میں پرانے ناکارہ اور پجرنے والے پائپس کی نشاندہی کی گئی تھی اور 991 کیلو میٹرس پائپ لائن تبدیل کرنے کی ضرورت ظاہر کی گئی تھی۔ سال 2013-14 ء میں کئے گئے سروے میں مزید 515 کیلو میٹر پائپ لائن تبدیل کرنے کی ضرورت پر زور دیا گیا تھا۔ واٹر بورڈ کو پرانے پائپس اور غیر قانونی آبی کنکشن کی وجہ سے ہر سال 50 کروڑ تا 60 کروڑ روپئے کا نقصان ہورہا ہے۔ تقریباً 40 فیصد پینے کے پانی کی سربراہی کا کوئی حساب کتاب نہیں ہے اس کے لئے غیر قانونی آبرسانی کنکشن اور پرانے پائپس ذمہ دار ہیں جن سے پانی پجرتا رہتا ہے۔ 991 کیلو میٹر پائپ لائن تبدیل کرنے کی نشاندہی کی گئی تھی اس میں سے سال 2009 ء اور سال 2013-14 ء کے دوران تقریباً 476 کیلو میٹر پائپ لائن تبدیل کی گئی۔ واٹر بورڈ کے منیجنگ ڈائرکٹر دانا کشور نے کہاکہ بیک وقت تمام پرانے پائپ لائنس کو تبدیل کرنا ممکن نہیں ہے کیوں کہ پائپ لائن تبدیل کرنے کے مرحلہ میں پانی کی سربراہی بند کرنی پڑتی ہے۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT