Sunday , August 20 2017
Home / شہر کی خبریں / غیر قانونی عمارتیں منہدم نہیں بلاسٹ کردی جائیں گی

غیر قانونی عمارتیں منہدم نہیں بلاسٹ کردی جائیں گی

غیر قانونی تعمیرات کے خلاف ایچ ایم ڈی اے کی سخت کارروائی
امپلوزن سسٹم کے تحت عمارتوں کو زمین دوز کرنے پر غور و خوض
حیدرآباد ۔ 27 ۔ جولائی : ( سیاست نیوز ) : بغیر اجازت کے منزل پر منزل تعمیر کردیتے ہیں عہدیداران کی جانب سے کارروائی کے باوجود غیر قانونی تعمیرات میں اضافہ ہی ہوتا جارہا ہے ۔ غیر قانونی تعمیراتی عمل کی وجہ سے ہڈا کے عہدیداران بے حد پریشان ہیں اسی لیے زائد منزلوں کو منہدم کرنے کے بجائے کلی طور پر بلڈنگ کو زمین دوز کرنے پر غور کررہے ہیں ۔۔
لاکھوں میں غیر قانونی تعمیرات
ہڈا کے حدود میں آنے والے 7 اضلاع کے 849 گاؤں میں عہدیداران کے مطابق غیر قانونی تعمیرات لاکھوں میں ہیں ۔ ہڈا کے حدود میں لے آوٹ کی ترقی یا 12 میٹر سے اونچی عمارت تعمیر کرنا یا ایک سے زائد منزل تعمیر کرنا ہو تو ہڈا سے اجازت حاصل کرنا لازمی ہے ۔ عہدیداران قواعد و ضوابط کی تکمیل کے بعد ہی اجازت دیتے ہیں مگر بدعنوان افراد ایسے اجازت نامہ حاصل کر کے تعمیرات کرنے سے زیادہ خرچ آنے کی وجہ سے بغیر اجازت نامہ کے ہی منزل پر منزل تعمیر کرتے جارہے ہیں اور معصوم افراد کو فلیٹس فروخت کردیتے ہیں ۔ شہر کے مضافاتی علاقوں نظام پیٹ ، منی کونڈہ ، اپولا گوڑہ ، نارسنگی ، نیکنام پور ، پرگتی نگر اور بوڈو اپل جیسے مقامات پر بے شمار غیر قانونی تعمیرات زور و شور سے جاری ہیں ۔۔
غیر قانونی تعمیرات پر روک نہیں لگاتے
نچلی سطح کے ملازمین ہڈا ، پنچایت راج کا عملہ ایسی تعمیرات سے نظر چرا کر خاموشی اختیار کرتا ہے جس کی وجہ سے لاکھوں غیر قانونی تعمیرات وجود میں آرہی ہیں ۔ چیف منسٹر چندر شیکھر راؤ نے ہڈا کے عہدیداران پر سخت ناراضگی کا اظہار کیا ۔ اس لیے ہڈا کے عہدیداران نے ’ خصوصی ڈرائیو ‘ کو ترتیب دے رہے ہیں ۔ سینکڑوں غیر قانونی تعمیرات کو منہدم کردیا ۔ بدعنوان افراد اس کارروائی کے چند دن تک خاموش رہے مگر اب دوبارہ غیر قانونی تعمیرات کا دھندہ بڑے زور و شور سے شروع کرچکے ہیں ۔ کئی تعمیرات مکمل ہونے کے بعد ان لوگوں نے فلیٹس بھی فروخت کردیا ہے ۔ نچلی سطح کے عہدیداران کی خاموشی کا ہی سبب ہے کہ نظام پیٹ میں بنڈاری لے آوٹ اور دیگر عمارتیں ہیں ۔ نچلی سطح
کے ملازمین کی خاموشی سے غیر قانونی تعمیرات کے خلاف اعلیٰ عہدیداران نے سخت نوٹ لیا ہے اور غیر قانونی تعمیرات کرنے والوں کو کسی طرح کا خوف نہیں ہے کیوں کہ انہیں پورا بھروسہ ہے کہ تعمیر مکمل ہونے کے بعد کچھ نہیں کرتے یا غیر قانونی زائد تعمیر شدہ عمارت کو منہدم کردیں گے اور عہدیداران دوبارہ اس جانب واپس نہیں آئیں گے ۔ اس وہم و خیال میں دوبارہ غیر قانونی تعمیرات شروع کردیتے ہیں ۔ ان غیر قانونی تعمیرات کو روکنے کے لیے عہدیداران سخت فیصلہ جیسے امپلوزن سسٹم کے ذریعہ عمارت کو زمین دوز کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ ٹاملناڈو کی راجدھانی چینائی میں اس عمل کے ذریعہ 11 منزلہ عمارت کو صرف تین سکنڈ میں زمین دوز کردیا گیا ۔ اتنا ہی نہیں راجستھان ، گجرات ریاستوں میں بھی ایسا ہی عمل کیا جاتا ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT