Thursday , August 24 2017
Home / شہر کی خبریں / غیر مجاز تعمیرات و قبضہ جات کو برخواست کرنے کی مہم

غیر مجاز تعمیرات و قبضہ جات کو برخواست کرنے کی مہم

جی ایچ ایم سی کی جانب سے عملہ دوبارہ متحرک ۔ تعمیرات و قبضوں کی نشاندہی کا عمل جاری
حیدرآباد۔21مارچ(سیاست نیوز) غیر مجاز و غیر قانونی تعمیرات کے متعلق مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے دوبارہ عملہ کو حرکت میں لانے کے اقدامات کئے جانے لگے ہیں اور تیزی سے کاروائی کو ممکن بنانے کی کوشش کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ سال گذشتہ حکومت تلنگانہ نے ریاست بالخصوص شہر میں تیز بارش کے دوران ہوئی تباہی کو دیکھتے ہوئے جی ایچ ایم سی کو ہدایت دی تھی کہ وہ شہر میں غیر مجاز و غیر قانونی تعمیرات کی نشاندہی کرے علاوہ ازیں بغیر اجازت کی گئی تعمیرات کے متعلق بھی تفصیلات اکٹھا کرنے کی ہدایت دی گئی تھی ان ہدایات کی اجرائی کے بعد سے جی ایچ ایم سی عہدیداروں نے کچھ عمارتوں کو نشانہ بنانے کا سلسلہ شروع کردیا تھا جس کے نتیجہ میں بعض مقامات پر بڑے پیمانے پر انہدامی کاروائی بھی کی گئی لیکن اس انہدامی کاروائی پر عدالتی احکام کے ذریعہ روک لگ گئی لیکن اب جی ایچ یم سی عملہ ایک مرتبہ دوبارہ متحرک ہوتے ہوئے ان غیر مجاز عمارتوں اور قبضہ جات کو برخواست کروانے کی مہم شروع کرنے جا رہا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ ان عمارتوں کے ساتھ ساتھ شہر کے مختلف علاقوں میں موجود بغیر اجازت تعمیر کئے گئے مکانات کی تفصیلات بھی حاصل کی جا رہی ہیں تاکہ ان کے قانونی موقف کے متعلق آگہی حاصل کی جا سکے۔ریاستی حکومت نے غیر مجاز تعمیرات کے مقدمات کی یکسوئی کیلئے ٹریبونل کے قیام کا فیصلہ کیا تھااور گذشتہ اسمبلی اجلاس کے دوران اس بل کو منظوری بھی دیدی گئی لیکن تاحال اس فیصلہ پر عمل آوری نہیں ہو پائی جس کے نتیجہ میں جی ایچ ایم سی عمل کو پیشرفت میں دشواریاں پیش آنے لگی ہیں لیکن بتایاجاتا کہ حکومت نے بلدی عہدیداروں کو ہدایت دی ہے کہ فوری تمام مقدمات کو یکجا کرنے کے اقدامات کئے جائیں اور ان عمارتوں کی فہرست تیار کی جائے جو غیر مجاز تعمیر کی گئی ہیںاور ان کو نوٹسیں جاری کی جائیں تاکہ ان کے خلاف کاروائی کو ممکن بنایاجاسکے۔ دونوں شہروں حیدرآباد اور سکندرآباد کے علاوہ بلدی حدود میں آباد ہونے والی نئی کالونیوں کے متعلق تفصیلات اکٹھا کرنے کی ہدایات بھی جاری کرنے کے متعلق غور کیا جا رہا ہے ۔نوآبادیاتی علاقوں میں بلدیہ کی اجازت کے بغیر کی جانے والی تعمیرات کے علاوہ قدیم عمارتوں کو منہدم کرتے ہوئے کی گئی نئی تعمیرات کے متعلق بھی تفصیلات اکٹھا کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے ریکارڈس اور شہر میں موجود مکانات کی تعداد میں موجود فرق کو دور کرنے اقدامات تیز کئے جائیں گے۔

TOPPOPULARRECENT