Wednesday , October 18 2017
Home / شہر کی خبریں / غیر منظم شعبہ میں بھی ڈیجیٹل معاملتوں میں زبردست اضافہ

غیر منظم شعبہ میں بھی ڈیجیٹل معاملتوں میں زبردست اضافہ

نوٹ بندی کی مشکلات اب ختم ہو رہی ہیں۔ رکن نیتی آیوگ وی کے سرسوت کا اظہار خیال
حیدرآباد ۔ 14 ۔ جولائی : ( پی ٹی آئی ) : ڈیجیٹل معیشت کو فروغ دینے حکومت کی مہم کے بعد ڈیجیٹل معاملتوں اور ای ادائیگیوں میں اصافہ ہوگیا ہے ۔ اب تو غیر منظم شعبہ بھی اس کے فوائد کو سمجھنے لگا ہے ۔ رکن نیتی آیوگ وی کے سرسوت نے یہ بات بتائی ۔ انہوں نے پی ٹی آئی سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ڈیجیٹل معاملتیں بھی ہورہی ہیں ۔ حقیقت یہ ہے کہ آج کے اخبارات ہی میں یہ اطلاع آئی ہے کہ حکومت کی جانب سے جاری کردہ ایپ بھیم کے ذریعے 65 لاکھ معاملتیں ہوئی ہیں ۔ یہ جو پیشرفت ہے وہ بہت اطمینان بخش ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کی جانب سے نوٹ بندی کے بعد معیشت متاثر ہوگئی تھی لیکن اب صورتحال مستحکم ہورہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ نوٹ بندی کی وجہ سے معیشت متاثر ہوئی تھی لیکن اب صورتحال بالکل بہتر ہوگئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آج مارکٹ میں نقدی دستیاب ہے ۔ غیر منظم شعبہ میں بھی یہ احساس پیدا ہورہا ہے کہ نقدی کا شمار کرنے کی بجائے پوائنٹ آف سیل کو ترجیح دی جائے ۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ پوائنٹ آف سیل میں کافی اضافہ ہوا ہے اور مرکزی حکومت اس کی دستیابی کو مزید بہتر اور سہل بنانے اقدامات کررہی ہے ۔ حکومت کئی پوائنٹ آف سیل مشینوں کو رپورٹ کررہی ہے ۔ ابھی تک اس کی تیاری کے اخراجات کا تعین نہیں ہوسکا ہے ۔ ایسے میں اس کو مزید بہتر بنایا جارہا ہے ۔ اسکے علاوہ اس کی امپورٹ پر حکومت دے رہی ہے ۔ سرسوت نے بتایا کہ غیر منظم شعبہ میں ٹیکسٹائیل اور گارمنٹس میں کاروبار کریڈٹ پر ہوتا ہے ۔ پوائنٹ آف سیل کو منظم شعبہ میں زیادہ استعمال کیا جارہا ہے ۔ مسٹر سرسوت نے ادعا کیا کہ ڈیجیٹائزیشن کے نتیجہ میں کارکردگی بہتر ہوگی ۔ رشوت میں کمی آئے گی اور عوام تک رسائی میں مدد ملے گی ۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں سیل فونس کی تعداد ایک بلین تک ہے اس سے خود پتہ چلتا ہے کہ عوام تک رسائی میں اضافہ ہورہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT