Wednesday , August 23 2017
Home / شہر کی خبریں / فاروق حسین اور اجئے کمار کی ٹی آر ایس میں شمولیت

فاروق حسین اور اجئے کمار کی ٹی آر ایس میں شمولیت

چیف منسٹر کے سی آر نے کانگریس کے دو ارکان مقننہ کا استقبال کیا ‘ تلنگانہ کی ترقی کیلئے کام کرنے کا عہد
حیدرآباد۔25اپریل ( سیاست نیوز) چیف منسٹر تلنگانہ کے چندر شیکھر راؤ نے کانگریس کے رکن قانون ساز کونسل محمد فاروق حسین اور رکن اسمبلی پی اجئے کمار کا ٹی آر ایس میں خیرمقدم کرتے ہوئے اپوزیشن پر ترقی میں رکاوٹ پیدا کرنے کی کوشش کا الزام عائد کیا ۔ مسٹر محمد فاروق حسین نے کہا کہ کانگریس میں دم گھٹ رہا تھا ‘ تلنگانہ کانگریس کی نئی عاملہ میں گھروں میں ترکاری لاکر دینے اور جی حضوری کرنے والے قائدین کو اہمیت دی گئی ہے ۔ آج کیمپ آفس میں کھمم کی نمائندگی کرنے والے کانگریس کے رکن اسمبلی پی اجئے کمار اور کانگریس کے رکن قانون ساز کونسل محمد فاروق حسین نے چیف منسٹر کے سی آر کی موجودگی میں اپنے حامیوں کے ساتھ ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرلی ۔ اس موقع پر ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی ریاستی وزیر عمارات و شوارع  ٹی ناگیشور راؤ ‘ رکن پارلیمنٹ کویتا کے علاوہ دوسرے قائدین موجود تھے ۔ چیف منسٹر نے دونوں کانگریس قائدین کو ٹی آر ایس میں شامل کرتے ہوئے کہا کہ محمد فاروق حسین ان کے دیرینہ رفیق اور بچپن کے ساتھی بھی ہیں ۔ سیاست میں دونوں نے ایک ساتھ قدم رکھا ہے ۔ عوامی خدمات کا جذبہ ان میں کوٹ کوٹ کے بھرا ہے ۔ اقلیتوں کی ترقی و فلاح و بہبود کیلئے ہمیشہ کوشاں رہتے ہیں ۔ ریاستی وزیر ہریش راؤ  کے ساتھ ملکر سدی پیٹ کی ترقی کیلئے کام کررہے ہیں ‘ ٹی آر ایس پارٹی میں ان کا احترام رہے گا ۔ ان کی خدمات سے استفادہ کیا جائے گا ۔ پی اجئے کمار ایک نوجوان قائد ہیں اور کھمم ضلع ہیڈ کوارٹر کی نمائندگی کرتے ہیں ۔ پارٹی کو مستحکم کرنا ان کی ذمہ داری ہے ۔ وہ ضلع کھمم کی ترقی کیلئے ان کی خدمات سے بھی ضرور استفادہ کریں گے ۔ محمد فاروق حسین نے کہا کہ وہ عہدہ یا اقتدار کیلئے ٹی آر ایس میں شامل نہیں ہوئے ‘ چیف منسٹر کے سی آر ان کے دیرینہ ساتھی ہیں ۔ یوتھ کانگریس سے دونوں نے سیاسی زندگی کا آغاز کیا ہے ‘ ان کی ترقیاتی کاموں سے متاثر ہوکر پھر سے تلنگانہ ریاست کی تشکیل کیلئے ٹی آر ایس میں شامل ہوئے ہیں کیونکہ کانگریس میں انہیں گھٹن محسوس ہورہی ہے ۔ کانگریس غریبوں ‘ اقلیتوں اور پسماندہ طبقات سے دور ہوگئی ہے ۔ امیروں کی جماعت ہے ‘ عوامی خدمات انجام دینے والوں کی کانگریس میں کوئی اہمیت نہیں ہے ۔ کانگریس چاپلوسوںکی جماعت بن گئی ہے ۔ تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی میں سینئرس کو نظرانداز کردیا گیا ہے ‘ گھروں تک ترکاری پہنچانے اور ایئرپورٹ چھوڑنے کے علاوہ قائدین کا خیرمقدم کرنے والوں کو جگہ فراہم کی گئی ہے ۔ کیپٹن اُتم کمار ریڈی پردیش کانگریس صدارت کیلئے نااہل ہیں ۔ اگر وہ صدر برقرار  رہے تو گاندھی بھون کو قفل لگ جائے گا ‘ ان میں قائدانہ صلاحیتوں کا فقدان ہے ۔ پارٹی میں اقلیتوں کو نظرانداز کیا جارہا ہے ‘ انہیں پارٹی کے پروگرامس میں مدعو نہیں کیا جارہا تھا ‘ ضلع میدک میں کانگریس کے قائدین انہیں نظرانداز کررہے تھے ۔ 5کروڑ روپئے میںمیدک ایم ایل سی کی نشست فروخت کی گئی ہے ۔ محمد فاروق حسین نے کہا کہ ان کے قائد اپوزیشن قانون ساز کونسل محمد علی شبیر سے کوئی اختلافات نہیں ہے ‘ وہ مجھ سے عمر اور سیاست دونوں میں جونیئر ہیں لیکن ان سے کانگریس کے اقلیتی قائدین کو عام شکایت ہے کہ وہ سینئرس کو نظرانداز کررہے ہیں اور جونیئرس کو ابھار رہے ہیں ۔ محمد علی شبیر کو سمجھ لینا چاہیئے کہ وہ پارٹی میں سب کچھ نہیں ہیں اقلیتی قائدین کو فائدہ نہیں پہنچائے تو کم از کم نقصان نہ پہنچایئے ‘ ورنہ انقلاب آجائے گا پارٹی میں بغاوت ہوجائے گی ۔

TOPPOPULARRECENT