Saturday , October 21 2017
Home / کھیل کی خبریں / فراڈ کیس : برازیلی فٹبالر نیمار کی عدالت میں طلب

فراڈ کیس : برازیلی فٹبالر نیمار کی عدالت میں طلب

اسپینی کلب بارسلونا کو منتقلی کے معاملے میں 43ملین ڈالر کی دھوکہ دہی
میڈرڈ ، 14 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) اسپین کے مشہور فٹبال کلب بارسلونا کے برازیلی کھلاڑی نیمار کو فراڈ کے کیس میں عدالت نے 2 فبروری کو شواہد کے ساتھ پیش ہونے کا حکم دے دیا۔ نیمارپر 2013ء میں برازیلی کلب سینٹوس سے بارسلونا منتقلی کے دوران مبینہ طورپر دھوکہ دہی کا الزام ہے۔ برازیل کے کھلاڑی اور کلب نے آمدنی میں 43 ملین ڈالر کم ظاہر کئے تھے جس کے بعد اسپین میں نیمار پر مقدمہ قائم کیا گیا تھا۔ البتہ اب عدالت نے کلب سمیت تمام فریقوں کو طلب کر لیا ہے۔ سرکاری وکیل کی درخواست پر عدالت نے نیمار، اُن کے والدین، بارسلوناکے سابق صدر سیندرو رسل، کلب کے موجودہ صدر جوزف ماریا اور نیمار کے سابق کلب سینٹوس کے دو سابق عہدیداروں کو اگلے ماہ کی پہلی اور 2 تاریخ کو شواہد کے ساتھ پیش ہونے کا حکم صادر کیا۔ بارسلونا کے سابق نائب صدر جیویئر فوس کو بطور گواہ عدالت میں طلب کیا گیا ہے۔ نیمار کے خلاف فراڈ کا الزام اس وقت لگا تھا جب کلب کے ایک رکن نے نیمار کو معاہدے کے طورپر دی جانے والی رقم پر سوال اٹھایا تھا۔ بارسلونا نے شروع میں 57.1 ملین یورو کے معاہدہ کا اعلان کیا تھا جبکہ بعد میں 100 ملین کے قریب رقم کی ادائیگی کا اعتراف کیا تھا، جس کے بعد ان کے خلاف ٹیکس میں فراڈ کا مقدمہ دائر کیا گیا۔ بارسلونا نے تمام الزامات کو رد کرتے ہوئے معاہدہ کو مکمل طورپر قانونی قراردیا۔

TOPPOPULARRECENT