Saturday , August 19 2017
Home / Top Stories / فرقہ وارانہ فسادات سے اوپر آنے والے شخص کے ہاتھ میں ملک محفوظ نہیں

فرقہ وارانہ فسادات سے اوپر آنے والے شخص کے ہاتھ میں ملک محفوظ نہیں

یکم جنوری سے ترنمول کانگریس کی ’ مودی ہٹاو ۔ دیش بچاو ‘ نعرہ کے ساتھ مہم ۔ ترنمول سربراہ ممتابنرجی کا اعلان
کولکتہ 22 ڈسمبر ( سیاست ڈاٹ کام ) نوٹ بندی کے فیصلے کو آزاد ہندوستان کا سب سے بڑا اسکام قرار دیتے ہوئے ترنمول کانگریس کی سربراہ ممتابنرجی نے آج کہا کہ ان کی پارٹی ’ مودی ہٹاو ۔ دیش بچاو ‘ نعرہ کے ساتھ یکم جنوری سے سڑکوں پر اتر کر احتجاج کریگی ۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی ایک ایسے شخص ( مودی ) کے ہاتھوں میں محفوظ نہیں ہے جس کو سیاست کا درس فرقہ وارانہ فسادات سے حاصل ہوا ہے ۔ ممتابنرجی نے وزیر اعظم مودی پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اب علی بابا اور ان کے چار ساتھی ہی تمام فیصلے کر رہے ہیں۔ یہاں تک کہ وزیر فینانس کو بھی اس کا علم نہیں ہو رہا ہے ۔ صرف خدا جانتا ہے کہ ملک میں کیا ہو رہا ہے ۔ وہ لوگ عوام کو تباہ کر رہے ہیں ‘ ملک کو تباہ کر رہے ہیں حتی کہ خودا پنی پارٹی ( بی جے پی ) کو تباہ کر رہے ہیں۔ ممتابنرجی نے ترنمول کانگریس کے اہم قائدین کا ایک اجلاس طلب کیا تھا جس میں انہوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مودی حکومت ‘ جو کیش لیس معیشت کی بات کر رہی ہے ‘ وہ عوام کا سامنا کرنے کے موقف میں نہیں ہے ۔ مودی حکومت ان لوگوں کیلئے اچھی ہے جو خود کالے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہماری پارٹی کا واحد نعرہ یہی ہوگا کہ ’ مودی ہٹاو ۔ دیش بچاو‘ ہم ساری ریاست میں یکم تا 8 جنوری جلسے منعقد کرینگے ۔

چیف منسٹر نے ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی ۔ انہوں نے دعوی کیا کہ بینکوں میں پیسہ نہیںہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایک ایسا شخص جو اپنی کوئی ساکھ نہیں رکھتا ہندوستان جیسے ملک کی قیادت نہیں کرسکتا ۔ انہوں نے کہا کہ نوٹ بندی کے فیصلے کی وجہ سے ملک میں معاشی تباہی آگئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سورج نکلنے سے سورج ڈوبنے تک وہ لوگ فیصلے بدلتے جا رہے ہیں ۔ سو مرتبہ فیصلے بدلے گئے ہیں ۔ یہ لوگ حالت نیند میں بھی فیصلے بدل رہے ہیں۔ ممتابنرجی نے کہا کہ مودی حکومت نے نوٹ بندی جیسے بڑے فیصلے پر بھی پارلیمنٹ میں کوئی بیان نہیں دیا ہے ۔ پارلیمنٹ کو جمہوریت میں مندر کا مقام حاصل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک سنگین مسئلہ ہے ۔ اب وقت آگیا ہے کہ اپوزیشن مودی حکومت کے خلاف متحد ہوکر جدوجہد کرے ۔ انہوں نے کہا کہ صرف اس لئے کہ آپ کو اکثریت حاصل ہے آپ پارلیمنٹ کو کو نظر انداز نہیں کرسکتے ۔ راجیو گاندھی کے بھی 400ارکان پارلیمنٹ تھے ۔ وہ نہیں جانتیں تھیں کہ بوفورس کیا ہے لیکن عوام تک کرپشن کا پیام ضرور گیا تھا ۔ ممتا نے پارٹی قائدین کو بی جے پی کے خلاف چوکس رہنے کو بھی کہا ۔

TOPPOPULARRECENT