Thursday , August 17 2017
Home / ہندوستان / فرنویس اور رام دیو کے خیالات خالص شخصی

فرنویس اور رام دیو کے خیالات خالص شخصی

حکومت اتفاق نہیں کرتی ۔ مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو کی وضاحت
نئی دہلی 5 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو نے آج چیف منسٹر مہاراشٹرا دیویندر فرنویس اور یوگا گرو رام دیو کے بھارت ماتا کی جئے نعرہ نہ لگانے والوں کے تعلق سے ریمارکس کو عملا مسترد کردیا اور کہا کہ ان کے خیالات کو حکومت نے کسی بھی حکمنامہ کے ذریعہ سند عطا نہیں کی ہے ۔ ایک اور مرکزی وزیر نجمہ ہپۃ اللہ نے بھی ان ریمارکس کی اہمیت کو گھٹانے کی کوشش کی ہے اور کہا کہ اس طرح کے مسائل در اصل ترقی سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے ۔ وینکیا نائیڈو نے فرنویس کے ریمارکس پر کہا کہ یہ ان کے شخصی ریمارکس ہیں اور وہ ( نائیڈو ) ان سے اتفاق نہیں کرتے ۔ نائیڈو نے سوال کیا کہ آیا حکومت نے ایسا کوئی سرکلر جاری کیا ہے کہ جو لوگ بھارت ماتا کی جئے نہیں کہتے انہیں ملک سے چلے جانا چاہئے ؟ ۔ انہوں نے کہا کہ یہ نعرہ کسی کیلئے لازمی نہیں ہے اور نہ ہی حکومت نے کسی حکمنامہ کے ذریعہ اس کو کسی پر مسلط کیا ہے ۔ یہ ایک جذباتی مسئلہ ہے اور سبھی کے جذبات کو سمجھنے کی ضرورت ہے ۔ نائیڈو نے رام دیو کے ریمارکس کو بھی قبول کرنے سے انکار کردیا اور کہا کہ یہ بھی رام دیو کے شخصی خیالات ہیں اور حکومت کے نہیں۔ دیویندر فرنویس نے کہا تھا کہ جو لوگ یہ نعرہ نہیں لگاتے انہیں ملک سے چلے جانا چاہئے ۔ رام دیو نے کہا تھا کہ اگر انہیں ملک کے قانون کا احترام نہیں ہوتا تو جو لوگ یہ نعرہ نہیں لگاتے ان کے سر قلم کردئے جاتے ۔ نجمہ ہپۃ اللہ نے کہا کہ اس طرح کے مسائل پر جو تنازعات پیدا کئے جاتے ہیں ان کا مقصد در اصل ترقی کے ایجنڈہ سے توجہ ہٹانا ہوتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT