Thursday , June 29 2017
Home / شہر کی خبریں / فروٹ مارکٹ میں آم سے لدی لاریاں روکدی گئیں

فروٹ مارکٹ میں آم سے لدی لاریاں روکدی گئیں

کسانوں کا احتجاج ، کاربائیڈ سے آم پکانے پر کئی دکانات کے لائسنس منسوخ
حیدرآباد 10 اپریل (یواین آئی )شہر حیدرآباد کی گڈی انارم فروٹ مارکٹ میں کسانوں نے احتجاج کیا۔تلنگانہ کے مختلف اضلاع سے آئی آم کی لاریوں کو مارکٹ میں لے جانے کی اجازت دینے سے انکار پر کسانوں نے احتجاج کیا اور سڑک پر بیٹھ گئے ۔تاجروں نے واضح کیا کہ وہ ان کسانوں سے آم نہیں خرید سکتے ۔آم کی خریدی سے تاجروں کے انکار پر کسانوں نے شدید برہمی کا اظہار کیا ۔اضلاع محبوب نگر، نلگنڈہ سمیت دیگر اضلاع سے آم کے لوڈ کی لاریاں سڑکوں پر ہی ٹہری رہیں جس پر افسروں نے مداخلت کرتے ہوئے ان کو مارکٹ میں داخل ہونے کی اجازت دی لیکن مارکٹ کے تاجروں نے آم کی خریدی سے انکار کردیا ۔دوسری طرف قواعد کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کاربائیڈ کی مدد سے مصنوعی طورپر آم کو پکانے پر گڈی انارم فروٹ مارکٹ کی 90دکانات کے لائسنس منسوخ کردیئے گئے جس پرتاجرو ں نے برہمی ظاہر کی اور اور مارکٹ میں کاروبار کو روک دیا ۔تاجروں نے الزام لگایا کہ مارکٹ سکریٹری کی ہراسانی اور ان کے لائسنس کو منسوخ کرنے کے خلاف وہ ہڑتال کر رہے ہیں۔اس ہڑتال سے اس بڑی مارکٹ میں آم اور دیگر پھلوں کی خرید وفروخت پر اثر پڑااور پھلوں کی گاڑیاں جو تلنگانہ کے مختلف مقامات سے اس مارکٹ کو لائی گئی تھیں ، سڑکوں پر ہی ٹہری رہیں۔اطلاع ملتے ہی وزیر جوپلی کرشنا راو آج صبح مارکٹ پہنچے اور کسانوں کے مسائل سے واقفیت حاصل کی ۔ انہوں نے کسانوں کو یقین دہانی کروائی کہ ان کے مسائل جلد حل کئے جائیں گے ۔اسی دوران وزیر مارکٹنگ ہریش راو نے اس معاملہ پرشدید ردعمل کا اظہار کیا ۔انہوں نے کہا کہ آم کی خریدی کو روک دینا مناسب نہیں ہے ۔انہوں نے آم کی خریدی فوری شروع کرنے کی ہدایت دی اور کہا کہ خریداری روکنے والے تاجروں کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے گی۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT