Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / فلسطینی عوام سے اظہار یگانگت اور اسرائیلی بربریت کی مذمت

فلسطینی عوام سے اظہار یگانگت اور اسرائیلی بربریت کی مذمت

حیدرآباد میں انڈوعرب لیگ اور رحمت عالم کمیٹی کی کانفرنس
حیدرآباد ۔ 12 ۔ دسمبر : ( سیاست نیوز ) : قبلہ اول کی بازیابی اور مظلوم فلسطینیوں سے اظہار یگانگت کے لیے انڈو عرب لیگ اور کل ہند مرکزی رحمت عالم کمیٹی کے زیر اہتمام منعقدہ کانفرنس میں مقررین نے فلسطین کی بازیابی تک جدوجہد جاری رکھنے کا عہد کیا ۔ کانفرنس میں متفقہ طور پر قراد داد منظور کی گئی اور صہیونی طاقتوں کی بربریت کی مذمت کرتے ہوئے جدوجہد آزادی فلسطین کی تائید کا اعلان کیا گیا ۔ صدرنشین انڈو عرب لیگ و چیف ایڈیٹر رہنمائے دکن جناب سید وقار الدین قادری نے صدارت کی ۔ فلسطین کے سفیر ہزاکسلینسی عدنان ابو الھیجہ ، سوڈان کے سفیر ہزاکسلینسی حسن ای الطالب ، یمن کے سفیر ہزاکسلینسی جمال عبداللہ الحاج اور اردن کے سفیر ہزاکسلینسی حسن محمود محمد الجوارنہ کے علاوہ بنگلہ دیش کے عالم دین ڈاکٹر سید ارشاد محمد بخاری ، مدھیہ پردیش کے عالم دین مولانا محمد روح الامین اور دوسروں نے شرکت کی ۔ چنچل گوڑہ جونیر کالج گراونڈ پر منعقدہ اس کانفرنس میں مقررین نے فلسطینی نہتے عوام پر اسرائیلی بربریت کی سخت الفاظ میں مذمت کی اور ان سے مکمل اظہار یگانگت کیا ۔ مقررین کا کہنا تھا کہ اسرائیلی بربریت کے خلاف اسلامی ممالک کو متحدہ طور پر آواز بلند کرنی چاہئے اور انہیں فلسطینیوں کی ہر ممکن مدد کرنی چاہئے ۔ مقررین نے کہا کہ اقوام متحدہ میں فلسطین کے حق میں قرار داد کی منظوری کے باوجود اسرائیل ناجائز قبضے کو نہ صرف برقرار رکھے ہوئے ہے بلکہ فلسطینیوں پر مظالم کے ذریعہ یہودی بستیوں کو توسیع دینے میں مصروف ہے۔ جناب سید وقار الدین نے کہا کہ فلسطینیوں کا فلسطین پر اتنا ہی حق ہے جتنا دیگر ممالک کے شہریوں کا ان کے ممالک پر ہوتا ہے لیکن افسوس دنیا فلسطینیوں پر مظالم کا تماشہ دیکھ رہی ہے انہوں نے کہا کہ چند ایک ممالک کو چھوڑ کر زیادہ تر ممالک فلسطینی عوام کے ساتھ زبانی اظہار یگانگت کررہے ہیں ۔ حالانکہ انہیں چاہئے کہ وہ اسرائیل کو پابند کریں کہ وہ مظالم کا سلسلہ فوری بند کردیں ۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ اللہ تعالیٰ کی مدد و نصرت یقینی طور پر فلسطینیوں کے ساتھ شامل حال رہے گی اور وہ آزاد مملکت فلسطین کو حاصل کریں گے ۔ جناب سید وقار الدین قادری جو گذشتہ 45 برسوں سے زائد سے فلسطینی کاز کے لیے جدوجہد کررہے ہیں اور انہوں نے ملک بھر میں فلسطین کے حق میں رائے عامہ ہموار کرنے میں اہم رول ادا کیا ہے ۔ مرکزی حکومت پر انڈو عرب لیگ کے ذریعہ دباؤ بنانے کی کوشش کی گئی کہ وہ فلسطین کی تائید سے متعلق ہندوستان کی روایتی پالیسی سے انحراف نہ کرے ۔ فلسطین کے سفیر ہزاکسلینسی عدنان ابو الھیجہ نے کہا کہ اسرائیل نہتے اور معصوم فلسطینیوں کو نشانہ بنا رہا ہے لیکن فلسطینیوں کے حوصلے آج بھی بلند ہیں انہوں نے کہا کہ وہ دن دور نہیں جب مملکت فلسطین ایک آزاد مملکت ہوگی اور اسرائیل کو فلسطینیوں کا حق تسلیم کرنا پڑے گا ۔ فلسطینی سفیر نے اسرائیلی مظالم کی تفصیلات بیان کی اور کہا کہ کمسن بچوں کو نشانہ بنایا گیا اور رہائشی عمارتوں پر حملے کیے جارہے ہیں ۔ انہوں نے فلسطینی کاز کے لیے انڈو عرب لیگ کی تائید کی ستائش کی ۔ فلسطینی سفیر نے ان ممالک سے اظہار تشکر کیا جو فلسطینی عوام کی جدوجہد کی تائید کررہے ہیں ۔ کانفرنس میں قرار داد منظور کرتے ہوئے اسرائیلی بربریت کی مذمت اور مغربی طاقتوں کے دوہرے رویے پر تنقید کی گئی ۔ مولانا محمد روح الامین نے اپنے خطاب میں کہا کہ فلسطین کی اسلامی اعتبار سے غیر معمولی اہمیت ہے ۔ حضرت عمر ؓ کے دور خلافت میں فلسطین کو حاصل کیا گیا تھا ۔ انہوں نے کہا کہ فلسطین اور بیت المقدس سے مسلمانوں کی وابستگی اس اعتبار سے اہمیت کی حامل ہے کہ معراج کے سفر سے قبل حضور اکرم ﷺ نے انبیاء کی امامت فرمائی تھی ۔ کانفرنس سے بعض مقامی مقررین نے بھی خطاب کیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT