Friday , September 22 2017
Home / دنیا / فلسطین کے اسرائیل سے تمام رابطے معطل

فلسطین کے اسرائیل سے تمام رابطے معطل

یروشلم۔22 جولائی ۔(سیاست ڈاٹ کام) فلسطین کے صدر محمود عباس نے یروشلم کے ایک مقدس مقام کے قریب اسرائیلی سیکورٹی فورسز کی طرف سے لگائی گئی بندش کو ختم کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے اسرائیل کے ساتھ سبھی سرکاری تعلقات معطل کرنے کا حکم دیا ہے ۔ مسلم اور یہودی کمیونٹی کے لوگوں کے لئے مقدس مقام تصور کئے جانے والے الحرم القدسی شریف کے پاس میٹل ڈیٹیکٹر لگائے جانے کے قدم کی فلسطین نے مخالفت کی ہے ۔ جس پر جمعہ کو فلسطین اور اسرائیلی سکیورٹی فورسز کے درمیان جھڑپ بھی ہوئی۔ اس جھڑپ میں تین لوگوں کی ہلاکت کی بھی تصدیق کی گئی ہے ۔ مسٹر عباس نے ٹیلی ویژن پر نشر اپنی ایک تقریر میں کہا کہ اسرائیل کی جانب سے مسجد اقصی کے قریب کئے گئے سیکورٹی چیک کے انتظامات غیر قانونی ہیں اور انہیں فوری طور پر ہٹایا جانا چاہیے ۔ ان کا کہنا تھا کہ جب اسرائیل فلسطینی قوم کے خلاف بالخصوص قبلہ اول اور بیت المقدس میں فلسطینیوں پر عاید کردہ پابندیاں نہیں اٹھاتے تل ابیب سے رابطے معطل رہیں گے۔تاہم یہ واضح نہیں کہ آیا فلسطینی اتھارٹی اسرائیل کے ساتھ جاری فوجی شعبے میں تعاون بھی منجمد کررہی ہے یا نہیں۔ انہوں نے اسرائیل پر امن مساعی کو آگے بڑھانے سے فرار اختیار کرنے کا بھی الزام عائد کیا اور کہا کہ اسرائیل بامقصد بات چیت کی بحالی کے بجائے سیاسی، مذہبی کشمکش کو ہوا دینے اور قبلہ اول کی زمانی اور مکانی تقسیم کی سازشوں میں مصروف ہے۔انہوں نے بیت المقدس کے فلسطینی باشندوں کی بہبود، اداروں اور کاروباری حلقوں کے لیے 25 ملین ڈالر کی رقم مختص کرنے کا بھی اعلان کیا۔

TOPPOPULARRECENT