Sunday , April 30 2017
Home / Top Stories / فوجی سربراہ نے کشمیر کی صورتحال سے قومی سلامتی مشیر کو واقف کروایا

فوجی سربراہ نے کشمیر کی صورتحال سے قومی سلامتی مشیر کو واقف کروایا

SRINAGAR, APR 16 (UNI):-Security forces stand guard deserted streets of Batmaloo, where people allege imposition of curfew like restrictions. UNI PHOTO -16U

جنرل بپن راوت کی اجیت ڈوول سے ملاقات ‘ وادی میں علحدگی پسندوں کی ہڑتال سے عام زندگی متاثر

نئی دہلی 16 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) فوجی سربراہ جنرل بپن راوت نے آج قومی سلامتی کے مشیر اجیت ڈوول کو کشمیر کی سکیوریٹی صورتحال سے واقف کروایا جہاں ایک متنازعہ ویڈیو پر برہمی ظاہر کی جا رہی ہے ۔ اس ویڈیو میںدکھایا گیا ہے کہ سکیوریٹی فورسیس نے وہاں ایک شخص کو اپنی جیپ پر باندھ کر انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کیا تھا ۔ واضح رہے کہ جنرل بپن راوت نے کل چیف منسٹر جموں و کشمیر میں محبوبہ مفتی اور ریاستی گورنر این این ووہر سے ریاست میں لا اینڈ آرڈ ر کی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا تھا ۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ فوجی سربراہ نے اجیت ڈوول سے ان کی قیامگاہ پر ملاقات کی اور انہیں وادی کشمیر میںسکیوریٹی کی جملہ صورتحال سے واقف کروایا ۔ ایک ویڈیو منطر عام پر آنے کے بعد ریاست میں برہمی ظاہر کی جا رہی ہے جس میں دکھایا گیا ہے کہ ایک فوجی گاڑی پر انسانی ڈھال کے طور پر ایک شخص کو فورسیس کی جیپ پر باندھ دیا گیا تھا ۔ یہ واقعہ سرینگر لوک سبھا حلقہ کے ضمنی انتخاب کے وقت پیش آیا تھا جس پر عوام نے شدید برہمی کا اظہار کیا تھا ۔ عوامی برہمی کو دیکھتے ہوئے سیول اور فوجی اتھارٹیز نے علیحدہ تحقیقات کا آغاز بھی کیا ہے ۔ جنرل راوت کے ساتھ اپنی ملاقات میں چیف منسٹر جموں و کشمیر نے اس ویڈیو کا مسئلہ بھی اٹھایا تھا جو اب سوشیل میڈیا پر وائرل ہوگیا ہے ۔ جنرل راوت نے چیف منسٹر جموں و کشمیر کو تیقن دیا تھا کہ ان اہلکاروں کے خلاف بروقت کارروائی کی جائیگی جو ایک شخص کو بڈگام میں سکیوریٹی فورسیس کی گاڑی سے باندھنے کے ذمہ دار ہیں۔ ذرائع کے بموجب فوجی عہدیداروں نے ایک تحقیقاتی ٹیم سے کہا ہے کہ انہیں انڈو تبت بارڈر پولیس اور مقامی پولیس سے کال موصول ہوا تھا جس میں فورسیس سے ایک ہجوم سے بچنے مدد طلب کی گئی تھی اور یہ ادعا کیا گیا کہ ہجوم انہیں ہلاک کرنے کیلئے آ رہا ہے ۔ آئی ٹی بی پی اور مقامی پولیس کے دستے پولنگ کے دوران ایک پولنگ اسٹیشن پر ڈیوٹی کر رہے تھے ۔

فوجی قافلہ کندی پورہ سے وہاں پہونچا اور اس نے ایک 36 سالہ شخص فاروق ڈار کو اپنی جیپ سے باندھ دیا تھا ۔ یہ واقعہ 9 اپریل کو پیش آیا تھا اور نا معلوم افراد نے اسے اپنے موبائیل فونس پر کیمرے میں قید کرلیا تھا اور فاروق ڈار کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے کا یہ ویڈیو سوشیل میڈیا پر گشت کروایا گیا ۔ یہ ویڈیو ایک اور کلب کے کچھ دن بعد منظر عام پر آیا تھا ۔ سابقہ ویڈیو میں سی آر پی ایف کے ایک جوان کو دکھایا گیا تھا جس کو کچھ نوجوان زد و کوب کر رہے تھے ۔ اس ویڈیو پر بھی قومی سطح پر برہمی کی لہر پیدا ہوگئی تھی ۔ اس دوران وادی کشمیر میں علیحدگی پسندوں کی جانب سے آج معلنہ ہڑتال کی وجہ سے عام زندگی متاثر رہی ۔ علیحدگی پسندوں نے شہر کے بٹمالو علاقہ میں بی ایس ایف جوانوں کی فائرنگ میں ایک 23 سالہ نوجوان کی موت کے خلاف ہڑتال کا اعلان کیا گیا تھا ۔ دوکانیں ‘ فیول اسٹیشنس اور دوسرے کاروباری ادارے وغیرہ بند رہے اورسڑکوں پر ٹریفک بھی کم دیکھی گئی ۔ تاہم خانگی کاریں ‘ کیابس اور آٹو رکشا وغیرہ چلائے گئے ۔ ہفتہ وار مارکٹ میں بھی کاروبار متاثر رہا کیونکہ دوکانداروں نے اپنے کاروبار بند رکھے ۔ اسی طرح کی اطلاعات دوسرے ضلع ہیڈ کوارٹرس سے بھی موصول ہوئی ہیں۔ عہدیداروں نے یہ بات بتائی ۔ 23 سالہ نوجوان سجاد احمد اس وقت ہلاک ہوگیا تھا جب بی ایس ایف کے جوانوں نے بٹمالو میں ان پر سنگباری کرنے والے ایک گروپ پر فائرنگ کردی تھی ۔ پولیس کے ایک ترجمان نے کہا کہ سرینگر میں کہیں بھی تحدیدات عائد نہیں کی گئی ہیں لیکن بٹ مالو اوردوسرے حساس علاقوں میں لا اینڈ آر ڈر کی برقرار ی کیلئے سکیوریٹی فورسیس کے دستوں کو متعین کردیا گیا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT