Wednesday , June 28 2017
Home / دنیا / فوجی علاقوں میں شیئر کی گئی سواریوں کے داخلہ پر امتناع

فوجی علاقوں میں شیئر کی گئی سواریوں کے داخلہ پر امتناع

بیجنگ ۔ 25 ۔ مئی : ( سیاست ڈاٹ کام): چین کے دارالخلافہ بیجنگ کے وہ تمام علاقے جو فوجی حدود میں آتے ہیں ۔ وہاں بائکس شیئر کرنے پر سیکوریٹی وجوہات کی بنیاد پر امتناع عائد کردیا گیا ۔ دوسری اہم بات یہ ہے کہ ان علاقوں میں ٹریفک کی زیادتی کی وجہ سے بھی حساس فوجی علاقوں کو خطرات لاحق ہوسکتے ہیں ۔ یہاں یہ بات دلچسپی سے خالی نہ ہوگی کہ چین ایک ایسے ملک کے طور پر سامنے آیا ہے جہاں سائیکل سواری کو بھی شیئر کیا جاتا ہے جو ایک کامیاب تجربہ ثابت ہوا ہے لیکن اب حالیہ دنوں میں شیئر کی گئی سائیکلوں کو فوجی علاقوں اور ہاسپٹل زون میں داخلہ کی اجازت نہیں ہوگی ۔ ایسے فوجی رہائشی علاقے اور سینٹوریمس جو فوج کے زیر نگرانی ہیں ۔ وہاں بھی شیئر کی گئی سائیکلوں کے داخلہ پر امتناع ہوگا ۔ دریں اثناء سنٹرل ملٹری کمیشن کے ٹریننگ مینجمنٹ ڈپارٹمنٹ کے ایک آفیسر نے ژینہوا خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ فوجی علاقوں کی دیکھ بھال میں شیئر کرنے والی سائیکلس نے نیا مسئلہ پیدا کردیا ہے جیسے غیر قانونی پارکنگ اور ان فوجی علاقوں میں داخلہ اور اخراج کا کوئی ریکارڈ نہ ہونے سے بھی آنے جانے والوں پر نظر نہیں رکھی جاسکتی جو کسی بھی وقت نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے ۔ اب شیئر کرنے والی سائیکلس کو فوجی علاقوں سے دور رکھا جائے گا اور ڈپارٹمنٹ کی جانب سے ان کی جانچ پڑتال بھی کی جائے گی ۔

 

امریکہ کی شام، ایران اور شمالی کوریا پر
مزید پابندی عائد کرنے کا اشارہ
واشنگٹن ،25مئی (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ کے وزیر خزانہ اسٹیون نیوچن نے امریکی کانگریس کے ارکان کو بتایا کہ انکا محکمہ ایران ، شام اور شمالی کوریا پر پابندی کا دباؤ بڑھانے کیلئے کام کریگا۔مسٹر نیوچن نے کہا کہ اسکے علاوہ انکا محکمہ بوئنگ اور ایئر بس کی طرف سے ایران کو طیارے فروخت کرنے کیلئے ضروری لائسنسوں کا جائزہ لے رہا ہے ۔ٹرمپ اتظامیہ کی بجٹ تجویز پر ایک کمیٹی کو دئے گئے بیان میں مسٹر نیوچن نے کہا کہ امریکی لوگوں کو بچانے کیلئے ہم ایران ،شام ار شمالی کوریا پر مزید پابندیاں لگانے کیلئے اپنی صلاحیت کا بھرپور استعمال کریں گے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT