Tuesday , September 19 2017
Home / Top Stories / فوج کی کشمیر میں تازہ تشدد کے بعد سخت چوکسی

فوج کی کشمیر میں تازہ تشدد کے بعد سخت چوکسی

کرفیو نافذ نہیں ‘ تاہم فوج کی بھاری جمعیت تعینات ‘ دراندازی کی دو کوششیں ناکام
سرینگر ۔ 6نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) فوج کو آج زیادہ تعداد میں سرینگر کے مختلف علاقوں میں تعینات کردیا گیا کیونکہ تشدد کے تازہ واقعات پیش آئے ۔ ایک کمسن کی موت کے بعد تشدد کے یہ واقعات معمولات زندگی کومتاثر کردینے میں کامیاب رہے ۔ وادی کشمیر میں آج مسلسل 121ویں دن علحدگی پسندوں کی ہڑتال کی اپیل کے نتیجہ میں بھی  سرینگر میں یا وادی کشمیر میں کسی جگہ پولیس کے بموجب کرفیو نافذ نہیں کیا گیا ۔ پولیس کے ترجمان نے کہا کہ صرف فوج شہر کے بعض علاقوں میں نظم و ضبط برقرار رکھنے کیلئے زیادہ تعداد میں تعینات کی گئی ہے کیونکہ کل ایک 16سالہ لڑکے قیصر صوفی کی زہرخورانی کی وجہ سے موت واقع ہونے کے بعد تشدد پھوٹ پڑا تھا ۔ صوفی مبینہ طور پر 25 اکٹوبر سے لاپتہ تھا اور شہر کے علاقہ شالیمار میں بیہوش پڑا ہوا دستیاب ہوا ۔

اُسے دواخانہ میں شریک کردیا گیا ہے تاہم مقامی عوام نے الزام عائد کیا کہ فوج نے اُسے کوئی زہریلی شئے کھلادی ہے ۔ پولیس کے بموجب تحقیقات جاری ہے ۔ ایک مقدمہ دفعہ 309 رنبیر قانون تعزیرات ہند کے تحت اقدام خودکشی کا نشاط پولیس اسٹیشن میں درج کرلیا گیا ہے ۔ حالانکہ سخت کشیدگی پائی جاتی ہے ۔ پرانے شہر کے علاقوں میں گاڑیوں کی ٹریفک اور عوام کی نقل و حرکت کم دیکھی گئی ہے ۔ تجارتی مرکز لعل چوک میں کافی تعداد میں خانگی کاریں اور آٹو رکشہ چل رہے ہیں ۔ پولیس کے ترجمان نے کہا کہ بعض دکانیں کھول دی گئی ہیں ۔ شہر کے مضافات میں کئی خانچہ فروشوں نے اپنی دکانیں قائم کرلی ہیں ۔ تاہم بیشتر دکانیں پٹرول پمپ اور دیگر کاروباری ادارے وادی کے دیگر مقامات پر بند ہیں ‘ امکان ہے کہ انہیں شام میں کھولا جائے گا ۔

کیونکہ علحدگی پسندوں نے 4بجے شام سے 15گھنٹے کی ہڑتال میں نرمی کا اعلان کیا ہے ۔تقریباً پانچ ہزارفوجی تاحال جھڑپوں میں زخمی ہوچکے ہیں ۔ دریں اثناء جموں سے موصولہ اطلاع کے بموجب دو فوجی جوان ہلاک اور دیگر تین بشمول دو فوجی اور ایک خاتون زخمی ہوگئے جب کہ پاکستانی فوج نے دو دراندازی کی کوششوں کو آڑ فراہم کرنے کیلئے خطہ قبضہ پر کرشنا گھاٹی اور پونچھ سیکٹرس میں فائرنگ شروع کردی تھی ۔ وہ دراندازی کی کوششوں کو پاکستان کی جانب سے کرشنا گھاٹی میں جنگ بندی کی خلاف ورزی کر کے آڑ فراہم کرنے کی کوشش کو ہندوستانی فوج نے ناکام بنادیا ۔ مہلک فوجی 22سالہ گُرسیوک سنگھ متوطن ترن تارن پنجاب کی حیثیت سے کی گئی ہے جو کرشنا گھاٹی میں ہلاک ہوا ۔ دوسرا مہلک فوجی پونچھ سیکٹر میں ہلاک ہوا اور دیگر پانچ شہری زخمی ہوگئے ۔جن کا علاج مختلف اسپتالوں میں ہورہا ہے ۔

 

جموں و کشمیر میں 300عسکریت پسند سرگرم  : ڈی جی پی
اسکولس کھولنے کیلئے جنوبی کشمیر میں فوج کی ’’اسکول چلو‘‘ مہم کا آغاز
سرینگر ۔ 6نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) جموں و کشمیر کی صورتحال کو انتہائی کمزور قرار دیتے ہوئے ریاستی ڈی جی پی کے راجندر نے کہا کہ 300عسکریت پسند اب بھی ریاست میں سرگرم ہیں اور خطہ قبضہ کے پاس دراندازی پریشان کن ہے ۔چیف منسٹر محبوبہ مفتی کی زیر صدارت منعقدہ ایک اجلاس میں ڈائرکٹر جنرل پولیس نے کہا کہ سرحد پر دراندازی مسلسل جاری ہے جو ہمارے لئے ایک پریشان کن مسئلہ ہے ۔ کشمیر کی صورتحال اور احتجاجی مظاہروں کے پیش نظر انتہائی کمزور قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اطلاعات کے بموجب 300عسکریت پسند اب بھی وادی کشمیر میں سرگرم ہیں اور وہی بے چینی کو ہوا دے رہے ہیں ۔ اونتی پورہ سے موصولہ اطلاع کے بموجب فوج نے اب جنوبی کشمیر میں اسکولوں کو دوبارہ کھولنے پر توجہ مرکوز کی ہے تاکہ وادی کشمیر میں صورتحال تیزی سے معمول پر آسکے ۔ چنانچہ ’’اسکول چلو ‘‘ مہم کا آج سے آغاز کیا گیا ہے جس کے تحت طلبہ کو پُرسکون ہوجانے کی تلقین کی جاتی ہے ۔ انہیں مفت کوچنگ فراہم کی جاتی ہے اور زائد از نصاب سرگرمیوں میں حصہ لینے کی ترغیب دی جاتی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT