Friday , August 18 2017
Home / شہر کی خبریں / فوڈ سیکوریٹی کارڈس سے حصول راشن کنندوں کی تفصیلات اکٹھا

فوڈ سیکوریٹی کارڈس سے حصول راشن کنندوں کی تفصیلات اکٹھا

ٹیلی فون اور برقی بلس کا جائزہ لیا جائے گا ، محکمہ سیول سپلائز کا فیصلہ
حیدرآباد۔ 17 اگسٹ ( سیاست نیوز ) شہر حیدرآباد و سکندرآباد کے شہری جو فوڈ سیکیوریٹی کارڈ کے ذریعہ حاصل ہونے والے راشن حاصل کر رہے ہیں ان کی غربت کا جائزہ لینے کیلئے ان کے ٹیلی فون اور برقی بلوں کا مشاہدہ کیا جائے گا۔ فوڈ سیکیوریٹی کارڈ کے غلط استعمال کو روکنے اور جو مستحق نہیں ہیں ان سے کارڈس واپس لینے کیلئے کئے جانے والے ان اقدامات کے تحت بتایا جاتا ہے کہ محکمۂ سیول سپلائیز نے صارفین کے معاشی موقف سے آگہی حاصل کرتے ہوئے نئے راشن کارڈس جاری کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس فیصلہ کے بعد سمجھا جاتا ہے کہ محکمہ کے پاس موجود فون نمبرات اور گھر کے پتہ کے ذریعہ برقی میٹر کی تفصیلات اکٹھا کرتے ہوئے ان کی مجموعی بلز کی تفصیلات حاصل کی جائیں گی۔ ریاست تلنگانہ کے علاوہ ملک کی دیگر ریاستوں میں سطح غربت سے نیچے زندگی گذارنے والوں کیلئے حکومت کے عوامی نظام تقسیم کے ذریعہ ارزاں فروشی کی دکانات پر کم قیمت میں راشن کی فروخت عمل میں لائی جاتی ہے۔ ریاست تلنگانہ میں عوامی نظام تقسیم کو مزید بہتر‘ مستحکم اور شفاف بنانے کے اقدامات کے طور پر فوڈ سیکیوریٹی کارڈس کی تقسیم عمل میں لائی گئی تھی اور نئے راشن کارڈ کی عنقریب اجرائی عمل میں لائی جائے گی اس سے قبل تمام راشن کارڈ گیرندوں کی مکمل تفصیلات اکٹھا کرنے کے اقدامات جاری ہیں۔ ذرائع کے بموجب حکومت کی جانب سے سخت تنقیح کے باوجود ابھی تک 84ہزار ایسے خاندانوں کی شناخت کی گئی ہے جو فوڈ سیکیوریٹی کارڈس کے لئے اہل نہیں ہیں لیکن اس کے باوجود انہیں فوڈ سیکیوریٹی کارڈس کی اجرائی عمل میں آئی ہے۔ اس صورتحال کو دیکھتے ہوئے مزید سخت تنقیح کے ساتھ نئے راشن کارڈس کی اجرائی کی منصوبہ بندی کی گئی ہے

 

اور اس منصوبہ بندی کے ذریعہ ان تمام راشن کارڈ گیرندوں کے کارڈس منسوخ کر دیئے جائیں گے جو اہل نہیں ہیں اور انہیں فوڈ سیکیوریٹی کارڈس کی اجرائی عمل میں نہیں آئے گی۔ بتایا جاتا ہے کہ شہر حیدرآباد اور ضلع رنگا ریڈی کے علاقوں میں سب سے زیادہ ایسے خاندانوں کی نشاندہی عمل میں لائی گئی ہے جو اہل نہ ہوتے ہوئے بھی فوڈ سیکیوریٹی کارڈس حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں اور اب تک نشاندہی کردہ تمام خاندانوں کی تفصیلات کمشنر محکمۂ سیول سپلائیز کو روانہ کردی گئی ہیں اور بہت جلد ان پر قطعی فیصلہ کرنے کے بعد ماہ اکٹوبر کے درمیان میں نئے راشن کارڈس کی اجرائی کا عمل شروع کر دیا جائے گا۔ نئے راشن کارڈ کی اجرائی کے بعد یہ کارڈ بطور شناختی کارڈ یا دیگر اسکیمات سے استفادہ کیلئے سند کے طور پر قبول نہیں کئے جائیں گے۔ ان کارڈس کے ذریعہ صرف راشن کا حصول ممکن ہو سکے گا۔دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد میں اس منصوبہ پر عمل آوری اور تحقیق و تنقیح میں شدت کی صورت میںکئی مسائل پیدا ہونے کاخدشہ ہے۔ کیونکہ مکان کے برقی بل یا موبائیل فون کے بل کے اخراجات کی بنیاد پر غربت کا اندازہ لگانا شروع کر دیا جائے تو ایسی صورت میں کئی فوڈ سیکیوریٹی کارڈ سے استفادہ کرنے والے خاندان اس اسکیم کی سہولت سے محروم ہو جائیں گے ۔

TOPPOPULARRECENT