Sunday , September 24 2017
Home / شہر کی خبریں / فٹ پاتھ قبضوں کی برخاستگی کے لیے دکانداروں کو نوٹسیس کی اجرائی

فٹ پاتھ قبضوں کی برخاستگی کے لیے دکانداروں کو نوٹسیس کی اجرائی

غلطی کے مرتکب تجار کی جیل منتقلی ، بلدیہ اور ٹریفک پولیس کے رویہ سے عوام میں تشویش
حیدرآباد۔9فروری(سیاست نیوز) محکمہ ٹریفک پولیس اور جی ایچ ایم سی کی جانب سے فٹ پاتھ پر قبضہ جات کی برخواستگی اور عوامی جگہ کا تجارتی اغراض کے لئے استعمال کے خلاف شروع کردہ مہم کے بعد دوبارہ دکانداروں کی جانب سے فٹ پاتھ کے استعمال پر انہیں نوٹسوں کی اجرائی عمل میں لائی جا رہی ہے اور اس نوٹس کے بعد ایسا کرنے کے مرتکب دکانداروں کو عدالت میں پیش کرتے ہوئے ان پر جی ایچ ایم سی ایکٹ کے تحت کاروائی کی جائے گی اور انہیں جیل بھیج دیا جائے گا۔ پرانے شہر کے تاجرین کو جاری کردہ ان نوٹسوں میں واضح کیا گیا ہے کہ محکمہ ٹریفک پولیس اور مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے تعاون و اشتراک سے خصوصی مہم چلاتے ہوئے کی جارہی اس کاروائی میں تجارتی برادری تعاون کرے بصورت دیگر جی ایچ ایم سی ایکٹ کے تحت کاروائی کیلئے تیار رہیں۔ گذشتہ یوم پرانے شہر کے علاقوں شاہ علی بنڈہ‘ انجن باؤلی‘ روپ لعل بازار ‘ خلوت‘ موتی گلی کے علاوہ اطراف کے علاقو ںمیں تجارت کررہے ایسے تاجرین جو تجارتی سامان اپنی جائیداد کے سامنے کھلی جگہ پر رکھتے ہیں انہیں نوٹس جاری کرتے ہوئے فوری سامان ہٹالینے کی ہدایت دی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ ایسا نہ کرنے پر ان کے خلاف کاروائی میں کوئی ہچکچاہٹ نہیں کی جائے گی۔ محکمہ ٹریفک پولیس کی جانب سے جاری کردہ نوٹسوں کے متعلق تاجرین کا کہنا ہے کہ سڑک پر راہگیروں کیلئے رکاوٹیں پیدا کرنے والے ٹھیلہ بنڈی رانوں اور دیگر افراد جو بھاری معمول دیتے ہیں ان کے خلاف کوئی کاروائی نہیں کی جا رہی ہے جبکہ ایسے تاجرین کو نشانہ بنانے کی کوشش کی جا رہی ہے جو نہ صرف باضابطہ تجارتی لائسنس رکھتے ہوئے تجارت کررہے ہیں بلکہ لوگوں کو روزگار دینے کے علاوہ حکومت کی آمدنی میں اضافہ میں اعانت کرتے ہیں۔ تجارتی برادری کا کہنا ہے کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد اور محکمہ ٹریفک پولیس کی جانب سے کی جانے والی یہ کاروائی ان علاقوں میں تجارتی سرگرمیوں کو متاثر کرنے کا سبب بن سکتی ہے اسی لئے اس طرح کی کاروائیوں پر توجہ دینے کے بجائے شہر کی سڑکوں پر ٹریفک کے بہاؤ میں بہتری لانے کے اقدامات کئے جائیں۔محکمہ ٹریفک پولیس اور جی ایچ ایم سی عہدیداروں کا کہنا ہے کہ شہر میں تجارتی اصول مرتب ہیں اور ان قوانین کے مطابق تجارت کرنے والوں کے خلاف کوئی کاروائی نہیں کی جا رہی ہے بلکہ یہ کاروائی ان لوگوں کے خلاف ہے جو لوگ عوامی جگہ کا تجارتی غرض کیلئے استعمال کر تے ہوئے پیدل راہروؤں کیلئے تنگی پیدا کر رہے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT