Tuesday , May 30 2017
Home / کھیل کی خبریں / فکسنگ ‘ پی سی بی کو مزید

فکسنگ ‘ پی سی بی کو مزید

شرمندگی اٹھانی پڑے گی: اختر
کراچی9 فروری (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان کے سابق فاسٹ بولر شعیب اختر کا کہنا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ اگر اسپاٹ فکسنگ کے الزام میں شرجیل خان اور خالد لطیف کے خلاف الزام ثابت نہیں کر پاتی ہے تو اسے مزید شرمندگی کا سامنا کرنا پڑے گا۔ پی سی بی نے بدعنوانی مخالف قانون کے تحت شرجیل اور خالد کو معطل کیا تھا اور وطن واپس لوٹنے کے بعد دونوں کھلاڑی لاہور میں اے سی یو سربراہ اور بورڈ کے قانونی ماہرین کے سامنے تین بار پیش ہو چکے ہیں۔ اختر نے ایک ٹی وی چینل سے کہا، “مجھے نہیں پتہ لیکن اگر شرجیل اور خالد جرم کا اعتراف نہیں کرتے اور بورڈ چارج شیٹ طے کرتا ہے اور اس معاملے کی تحقیقات کیلئے کمیشن مقرر کرتا ہے تو مجھے لگتا ہے کہ اے سي یو سربراہ نے جلدی کی اور کھلاڑیوں کو وطن بھیج کر انہوں نے غلطی کی ہے ۔ راولپنڈی ایکسپریس کے نام سے مشہور سابق فاسٹ بولر نے کہا کہ انہیں لگتا ہے کہ پی سی بی کی اینٹی کرپشن یونٹ کے سربراہ کرنل ریٹائرڈ اعظم نے اس پورے معاملے میں جلد بازی کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کسی بھی عدالت یا کمیشن کے سامنے میچ فکسنگ کے الزامات ثابت کرنا مشکل رہا ہے ۔ پاکستان کیلئے 46 ٹیسٹ، 163 ون ڈے اور 15 ٹوئنٹی -20 بین الاقوامی میچ کھیلنے والے اختر نے 2011 میں عالمی کپ کے بعد بین الاقوامی کرک کو الوادع کہہ دیا تھا۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT