Wednesday , September 27 2017
Home / شہر کی خبریں / فہرست رائے دہندگان پر نظر ثانی مہم کا آئندہ ماہ اختتام

فہرست رائے دہندگان پر نظر ثانی مہم کا آئندہ ماہ اختتام

جیوٹیاگنگ کو بھی ممکن بنانے پر غور ، جی ایچ ایم سی کی تجویز
حیدرآباد۔24اگسٹ (سیاست نیوز) شہر حیدرآباد میں فہرست رائے دہندگان پر نظر ثانی کے سلسلہ میں جاری مہم ماہ ستمبر کے اختتام تک مکمل کرلی جائے گی اور فہرست رائے دہندگان کو عصری تقاضوں سے ہم آہنگ کرنے کے سلسلہ میں بھی اقدامات کئے جارہے ہیں تاکہ فہرست رائے دہندگان میں شامل رائے دہندوں کی جیو ٹیاگنگ کو بھی ممکن بنایا جاسکے۔ مجلس بلدیہ عظیم ترحیدرآبادکے حدود میں شامل 41لاکھ32ہزار رائے دہندوں کی جیو ٹیاگنگ کے ذریعہ فہرست رائے دہندگان میں اندراج کو ممکن بنانے کے اقدامات کئے جارہے ہیں اور اس سلسلہ میں تاحال 45فیصد کام مکمل کرلیا گیا ہے ۔ مجلس بلدیہ عظیم ترحیدرآباد کی جانب سے انجام دیئے جا رہے اس عمل کے دوران یومیہ 70ہزار رائے دہندوں کا احاطہ کیا جا رہا ہے اور بوتھ لیول آفیسر کی موجود گی میں رائے دہندوں کا آن لائن اندراج کیا جانے لگا ہے تاکہ تمام افراد خاندان کے ناموں کو یکجا کرتے ہوئے ان کے مراکز رائے دہی کو ایک مقام پر ہی رکھنے کے اقدامات کئے جاسکیں۔عہدیداروں نے بتایا کہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے حدود میں موجود 15حلقہ جات اسمبلی میں یہ عمل تیزی سے جاری ہے اور اس عمل میں کوئی رکاوٹ نہیں ہو رہی ہے بلکہ اس نظر ثانی کے دوران بوتھ لیول آفیسر کے گھروں تک پہنچنے کا یہ فائدہ ہو رہا ہے کہ انہیں ناموں کے اندراج یا اخراج میں بھی کوئی دشواری نہیں ہو رہی ہے اور ضرورت پڑنے پر ان عہدیداروں کی جانب سے رائے دہندوں کی نئی تصاویر بھی حاصل کی جانے لگی ہیں جوکہ فہرست رائے دہندگان کی تیاری میں معاون ثابت ہوگی۔شہر حیدرآباد کے علاوہ ریاست تلنگانہ کے مختلف اضلاع اور پڑوسی ریاست آندھرا پردیش میں بھی فہرست رائے دہندگان کو عصری بنانے کے علاوہ جیو ٹیاگنگ کا عمل جاری ہے تاکہ عام انتخابات میں رائے دہی کے فیصد کو بہتر بنایا جاسکے۔چیف الیکشن آفیسر تلنگانہ و آندھرا پردیش مسٹر بھنور لعل نے بتایا کہ دونوں ریاستوں میں رائے دہندوں کی جیو ٹیاگنگ کا عمل جاری ہے اور توقع کی جا رہی ہے کہ دونوں ریاستوں میں معینہ مدت میں ہی ان تمام امور کو مکمل کرتے ہوئے فہرست رائے دہندگان کا مسودہ جاری کردیا جائے گا اور اسے سیاسی جماعتوں اور عوام کے مشاہدہ کیلئے رکھنے کے بعد اعترضات اور تجاویز وصول کی جائیں گی اور ان کا جائزہ لینے کے فوری بعد قطعی فہرست رائے دہندگان کی اجرائی عمل میں لائی جائے گی جس میں تمام رائے دہندوں کی جیو ٹیانگ موجود رہے گی۔بتایاجاتاہے کہ الیکشن کمیشن آف انڈیا کی جانب سے حلقہ واری اساس کے علاوہ ریاستی و قومی سطح پر رائے دہی کے فیصد میں اضافہ کو ممکن بنانے کے لئے جیو ٹیاگنگ کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔عہدیداروں کا کہنا ہے کہ ایک ہی خاندان سے تعلق رکھنے والے رائے دہندوں کے ووٹ علحدہ علحدہ مراکزرائے دہی پر ہونے کے باعث رائے دہی کے فیصد میں گراوٹ ریکارڈ کی جا رہی تھی اور اب جیو ٹیاگنگ کے بعد مکان کے حدود میں موجود مرکز رائے دہی پر ووٹوں کی منتقلی کے سبب رائے دہی کے فیصد میں اضافہ کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے اور توقع کی جا رہی ہے کہ عوام کو سہولت کی فراہمی فائدہ مند ثابت ہوگی۔

TOPPOPULARRECENT