Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / فیض عام ٹرسٹ کی جانب سے 100 مستحق خاندانوں میں راشن کی تقسیم

فیض عام ٹرسٹ کی جانب سے 100 مستحق خاندانوں میں راشن کی تقسیم

غریب طلبہ ، بیماروں ، متاثرین فسادات و آفات سماوی کو لاکھوں روپئے کی امداد
حیدرآباد ۔ 14 ۔ جون : ( سیاست نیوز ) : شہر حیدرآباد فرخندہ بنیاد کی سب سے بڑی خوبی یا خاص بات یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ نے اس شہر کے لوگوں کو ضرورت مندوں کی مدد ، مظلوموں و کمزوروں کی حمایت کی توفیق عطا فرمائی ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ حیدرآباد میں ایسی بے شمار تنظیمیں ہیں جو غریبوں ، محتاجوں ، بے بسوں اور ضرورت مندوں کی ہر لحاظ سے مدد میں مصروف ہیں ۔ ایسی ہی تنظیموں میں فیض عام ٹرسٹ بھی شامل ہیں جسے روزنامہ سیاست اور ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں کا بھر پور تعاون حاصل ہے ۔ فیض عام ٹرسٹ نے ماہ رمضان المبارک کی مناسبت سے 100 خاندانوں میں رمضان راشن پیاکٹس کی تقسیم عمل میں لائی ۔ اس سلسلہ میں روزنامہ سیاست کے احاطہ میں مستحق خاندانوں کے ذمہ داروں کو مدعو کرتے ہوئے انہیں رمضان راشن پیاکٹس حوالے کیے گئے ۔ اس موقع پر ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں ، فیض عام ٹرسٹ کے سکریٹری جناب افتخار حسین ، جناب رضوان حیدر ( ٹرسٹی ) ، ڈاکٹر مخدوم محی الدین ( ٹرسٹی ) ، ڈاکٹر سمیع اللہ خاں ، جناب انور خاں اور جناب سید حیدر علی ( تمام ارکان ) موجود تھے ۔ یہ کٹ چاول ، آٹا ، سوئیاں ، کھجور ، خشک میوے جات اور دیگر ضروری اشیاء پر مشتمل تھا ۔ سکریٹری و ٹرسٹی جناب افتخار حسین کے مطابق فیض عام ٹرسٹ نے 1982 سے تاحال 600 خاندانوں سے تعلق رکھنے والے 800 سے زائد طلبہ کو اسکولی تعلیم دلائی ۔ فیض عام ٹرسٹ کے مالی تعاون سے 839 طلبہ نے کالج کی تعلیم مکمل کی یا ان کی تعلیم جاری ہے ۔ 315 مرد و خواتین کا علاج و معالجہ کروایا ۔ ریلیف کے 269 کام انجام دئیے ۔ فی الوقت اس کی ذمہ داری پر 626 طلباء وطالبات پرائمری اسکولس میں اور 200 طلبہ ٹیکنیکی کالجس میں زیر تعلیم ہیں ۔ فیض عام ٹرسٹ نے 2609 طلباء وطالبات کو نرسنگ ٹریننگ بھی دلائی تاکہ وہ اپنے پیروں پر کھڑے ہوں اور خاندانوں کی مدد کریں ۔ جناب افتخار حسین کے مطابق سیاست کے ملت فنڈ کے اشتراک وہ تعاون سے کپڑا بینک بھی شروع کیا جہاں اب تک غریبوں میں کپڑوں کے 12500 سے زائد جوڑوں کی تقسیم عمل میں آئی ۔ فیض عام ٹرسٹ نے مظلوم انسانوں کی مدد کو اولین ترجیح دی ہے ۔ چنانچہ روزنامہ سیاست کے تعاون و اشتراک سے اس نے بالاپور میں مقیم پناہ گزیں روہنگیائی مسلمانوں کے لیے 2013-14 میں کاروبار کا ایک پراجکٹ شروع کیا جس پر 640000 کے مصارف آئے ۔ مظفر نگر فسادات کے متاثرین کی مدد کے لیے مختلف پراجکٹس پر 1770000 روپئے خرچ کئے ۔ بہار میں سال 2016 کے دوران سیلاب نے زبردست تباہی مچائی تھی اس وقت بھی متاثرین سیلاب کی مدد کے لیے 163300 روپئے خرچ کئے گئے ۔ وادی کشمیر کے تباہ کن سیلاب میں بھی سیاست ملت فنڈ کے ساتھ فیض عام ٹرسٹ بھی متاثرین کی مدد کے لیے پہنچ گیا اور 268900 کی لاگت سے وہاں امداد و راحت کے کام کیے گئے ۔ یہاں اس بات کا تذکرہ ضروری ہوگا کہ فیض عام ٹرسٹ کے لیے شہر کی ممتاز شخصیتیں صرف انسانی بنیادوں پر بے لوث خدمات انجام دے رہی ہیں ۔۔

TOPPOPULARRECENT