Wednesday , September 20 2017
Home / شہر کی خبریں / فیڈرل عمارت امریکہ کی طرز پر تلنگانہ سکریٹریٹ کی تعمیر

فیڈرل عمارت امریکہ کی طرز پر تلنگانہ سکریٹریٹ کی تعمیر

ڈیزائن کو قطعیت ، 300 کروڑ کے خرچ کا تخمینہ
حیدرآباد ۔ 8 ۔ ستمبر : ( سیاست نیوز ) : سکندرآباد میں واقع بیسن پولو گراونڈ کی 4 ایکڑ اراضی پر شکاگو ( امریکہ ) میں واقع فیڈرل عمارت کی طرز پر سکریٹریٹ کی نئی انٹیگریٹیڈ عمارت تعمیر کرنے کا ڈیزائن تیار کیا گیا ہے ۔ 300 کروڑ روپئے کی لاگت سے 6 منزلہ عمارت تعمیر کی جارہی ہے ۔ اس کی خوبصورتی میں چار چاند لگانے کے لیے 2 منزلہ گنبد ( ڈوم ) بھی تعمیر کیا جارہا ہے ۔ وی آئی پیز کے لیے خصوصی ہیلی پیاڈ بھی تیار کیا جارہا ہے ۔ اس عمارت میں 32 محکمہ جات کے دفاتر ایک ہی چھت کے نیچے کام کریں گے ۔ حکومت تلنگانہ سکندرآباد کے بیسن پولو گراونڈ پر تمام سہولتوں سے آراستہ نیا انٹگریٹیڈ سکریٹریٹ تعمیر کررہی ہے ۔ محکمہ دفاع نے اپنی تحویل میں موجود 37.9 ایکڑ اراضی ریاستی حکومت کے حوالے کرنے سے اتفاق کیا ہے ۔ جس پر نئی سکریٹریٹ کی عمارت تعمیر کرنے کی حکمت عملی تیار کرلی گئی ہے ۔ حکومت کے تمام محکمہ جات کو ایک ہی چھت کے نیچے لانے کے لیے شکاگو کے فیڈرل عمارت کی طرز پر نئی عمارت تعمیر کرنے کے لیے ڈیزائن بھی تیار کرلیا گیا ہے ۔ چیف منسٹر کی ہدایت پر ڈیزائن میں معمولی تبدیلیاں لائی جارہی ہیں ۔ ڈیزائن کو قطعیت دینے کے بعد دیڑھ سال میں سکریٹریٹ کی نئی عمارت تعمیر ہوجائے گی ۔ بیسن پولو گراونڈ کی جملہ 37.9 ایکڑ اراضی ہے ۔ جس میں 4 ایکڑ اراضی پر سکریٹریٹ کی عمارت تعمیر کی جائے گی ۔ جس پر 300 کروڑ روپئے خرچ ہونے کا تخمینہ تیار کیا گیا ہے ۔ تلنگانہ کی تہذیب و تمدن اور نظام کے دور میں تعمیر کی گئی عمارتوں کی نئی سکریٹریٹ کی عمارت میں جھلک نظر آئے گی ۔ 6 منزلہ عمارت کے اوپر 2 منزل گنبد تعمیر کیا جائے گا جو ساری عمارت کے لیے خوبصورتی کی علامت رہے گا ۔ سکریٹریٹ کے احاطے میں دلکش پارک اور خوبصورت فوارے بھی رہیں گے ۔ 6 لاکھ فیٹ اراضی پر تعمیرات رہیں گی ۔ ہر منزل پر ایک لاکھ فیٹ جگہ مختص کی جائے گی ۔ حکومت کے تمام 32 محکمہ جات کے دفاتر ایک ہی مقام سے خدمات انجام دیں گے ۔ چیف منسٹر اور دوسرے وی آئی پیز کے لیے 2 ایکڑ اراضی پر خصوصی ہیلی پیاڈ تیار کیا جائے گا ۔ نئے سکریٹریٹ میں ہر منزل پر متعلقہ محکمہ جات سے ملاقات کرنے کے لیے منی کانفرنس ہال ، وزراء ، سکریٹریز و پرنسپل سکریٹریز سے جائزہ اجلاس طلب کرنے وسیع کانفرنس ہال تعمیر کئے جارہے ہیں ۔ جس میں 100 تا 120 کرسیوں کے لیے مناسب جگہ فراہم کی جارہی ہے ۔ وزراء کے چیمبر کے قریب ہی متعلقہ محکمہ کے پرنسپل سکریٹری کے علاوہ دوسرے عہدیداروں کے دفاتر ہوں گے ۔ 2 ایکڑ اراضی پارکنگ کے لیے مختص کی جارہی ہے ۔ کام کاج کے لیے سکریٹریٹ پہونچنے والے عوام کے لیے علحدہ پارکنگ زون رہے گا ۔ جس میں گراونڈ کے ساتھ سیلر 1 اور 2 بھی رہے گا ۔ جہاں پر تقریبا 2 ہزار گاڑیاں پارک کرنے کی گنجائش رہے گی ۔ بیسن پولو گراونڈ حکومت کے حوالے کرنے کے بعد دیڑھ سال میں نئی سکریٹریٹ عمارت تعمیر کرنے کے لیے محکمہ عمارت و شوارع نے حکمت عملی تیار کی ہے ۔ عالمی طرز کی تعمیری کمپنی کی خدمات سے استفادہ کیا جارہا ہے ۔ ٹنڈرس کی طلبی پر شہرت یافتہ کمپنیوں کے آمد کی توقع کی جارہی ہے ۔ محکمہ دفاع نے بیسن پولو گراونڈ کے ساتھ میڑچل اور کریم نگر کے ایلوٹیڈ شاہراہوں کے لیے جملہ 106 ایکڑ اراضی تلنگانہ حکومت کے حوالے کرنے سے اتفاق کیا ہے ۔ متبادل کے طور پر اتنی ہی قدر کی اراضیات تین مقامات پر دینے کا تلنگانہ حکومت نے پیش کش کیا ہے ۔ ونپرتی میں 600 تا 700 ایکر ، ضلع وقار آباد میں 500 تا 550 ایکڑ ، جواہر نگر میں 593 ایکڑ اراضی دینے سے اتفاق کیا ہے ۔ محکمہ دفاع کے عہدیداروں نے ونپرتی اور وقار آباد کی اراضیات کا جائزہ لیا ہے ۔ قطعی فیصلہ محکمہ دفاع کو کرنا ہے ۔ 37.9 ایکڑ بیسن پولو گراونڈ کی اراضی کی قیمت 95 کروڑ روپئے محکمہ دفاع کو دینے کا ریاستی حکومت نے فیصلہ کیا ہے ۔ محکمہ دفاع سے اراضی حاصل ہونے کے بعد پیراڈئیز سے میڑچل ایلوٹیڈ کاریڈار کے لیے 15.76 ہیکڑ کریم نگر ایلوٹیڈ کاریڈار کے لیے 26.55 ہیکڑ اراضی کو ترقی دی جائے گی ۔ بوئن پلی تک میڑچل روڈ اور کریم نگر روڈ آوٹر رنگ روڈ تک توسیع دینے سے ٹریفک مسئلہ بڑی حد تک حل ہوجائے گا ۔ پی وی ایکسپریس کے طرز پر دونوں شاہراہوں کی تعمیرات کی جارہی ہے ۔ پی وی ایکسپریس وے سب سے بڑا 11 کیلو میٹر کا ایلوٹیڈ کاریڈار ہے جب کہ کریم نگر کاریڈار 10 کیلو میٹر اور میڑچل کاریڈار 4 کیلو میٹر پر مشتمل رہے گا ۔ دونوں کاریڈارس کی تعمیرات پر 2 ہزار کروڑ روپئے خرچ ہونے کا تخمینہ لگایا گیا ہے ۔ ان کاریڈارس کی تعمیرات سے پیراڈائیز اور جوبلی بس اسٹانڈ کے پاس ٹریفک مسائل حل ہوجائیں گے ۔ اوپر سے ایکسپریس وے اور نیچے سے جوں کی توں لوکل ٹریفک کے لیے سڑکیں دستیاب رہیں گی ۔۔

TOPPOPULARRECENT