Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / ف12 فیصد تحفظات کے نام پر مسلمانوں کو دھوکہ، چیف منسٹر کو خمیازہ بھگتنا پڑے گا

ف12 فیصد تحفظات کے نام پر مسلمانوں کو دھوکہ، چیف منسٹر کو خمیازہ بھگتنا پڑے گا

کانگریس کے دور میں 4 فیصد تحفظات میں 10 لاکھ مسلمانوں کو فائدہ، پاور پوائنٹ پریزنٹیشن سے جناب محمد علی شبیر کا خطاب

حیدرآباد 19 اپریل (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل مسٹر محمد علی شبیر نے پاور پوائنٹ پریزنٹیشن پیش کرتے ہوئے کہاکہ 4 فیصد مسلم تحفظات سے 10 لاکھ مسلمانوں کو فائدہ پہونچا۔ چیف منسٹر تلنگانہ کے چندرشیکھر راؤ نے 12 فیصد مسلم تحفظات کے نام پر مسلمانوں کو دھوکہ دیا ہے جس کا ٹی آر ایس حکومت کو خمیازہ بھگتنا پڑے گا۔ صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کیپٹن اتم کمار ریڈی مسلم تحفظات ویب سائٹ اور قائد اپوزیشن اسمبلی مسٹر کے جانا ریڈی نے مسلم تحفظات کے فائدوں پر مشتمل ’’سکس اسٹوریز‘‘ کا رسم اجراء انجام دیا۔ اندرا بھون میں منعقدہ پاور پوائنٹ پریزنٹیشن میں سابق صدر پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر وی ہنمنت راؤ، مسٹر پنالہ لکشمیا، سابق وزراء سبیتا اندرا ریڈی، ڈاکٹر جے گیتا ریڈی، مسز ڈی کے ارونا، مسٹر جی ونود، مسز سنیتا لکشما ریڈی، رکن پارلیمنٹ مسٹر جی سکھیندر ریڈی، سابق مرکزی وزیر بلرام نائک، رکن اسمبلی بھاسکر راؤ، ارکان قانون ساز کونسل مسٹر محمد علی شبیر، مسز اکولہ للیتا، مسٹر دامودھر ریڈی، سابق رکن پارلیمنٹ مسٹر جی ویویک، نائب صدر تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی مسٹر عابد رسول خان، جنرل سکریٹریز مسٹر ایس کے افضل الدین، مسٹر محمد مقصود احمد، مسٹر سید عظمت اللہ حسینی، مسز عظمیٰ شاکر، صدر تلنگانہ پردیش کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ مسٹر محمد خواجہ فخرالدین، صدر گریٹر حیدرآباد سٹی کانگریس اقلیت ڈپارٹمنٹ مسٹر شیخ عبداللہ سہیل، جنرل سکریٹری حیدرآباد سٹی کانگریس مسٹر سید نظام الدین، صدر تلنگانہ یوتھ کانگریس مسٹر انیل کمار یادو، سابق کارپوریٹرس مسٹر ایس محمد واجد حسین، مسٹر محمد غوث، مسٹر معراج محمد کے علاوہ دوسرے قائدین موجود تھے۔ مسٹر محمد علی شبیر نے ہندوستان پر مسلمانوں کی حکمرانی سے ملک کی آزادی تک ملک میں مسلمانوں کے حالات پر روشنی ڈالی۔ ملک کے پہلے وزیراعظم پنڈت جواہر لال نہرو سے ڈاکٹر منموہن سنگھ تک اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کی ترقی و بہبود کیلئے کئے گئے اقدامات کا احاطہ کیا۔ آزادی سے قبل مذہب اور طبقہ کی بنیاد پر عطا کئے گئے تحفظات کا احاطہ کیا۔ 8 اگسٹ 1947 ء کو اسمبلی میں پیش کی گئی میناریٹی رپورٹ، سچر کمیٹی رپورٹ کے علاوہ مختلف کمیٹیوں اور کمیشنوں کی رپورٹس کا حوالہ دیا جس میں مسلمانوں کی تعلیمی، معاشی، سماجی پسماندگی کو اُجاگر کیا گیا۔ کانگریس پارٹی مسلمانوں کی ترقی و بہبود کی پابند ہے۔ مسلمانوں کو تحفظات بھی فراہم کئے تاہم فرقہ پرستوں نے تحفظات کو عدالتی کشاکش کا شکار بنادیا۔ (سلسلہ صفحہ 8 پر)

TOPPOPULARRECENT