Wednesday , August 23 2017
Home / اضلاع کی خبریں / قبرستان کمیٹی نظام آباد کا غیر ذمہ دارانہ رویہ

قبرستان کمیٹی نظام آباد کا غیر ذمہ دارانہ رویہ

نظام آباد:7 ؍ اپریل (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز )قدیم قبرستان بودھن روڈ نظام آباد میں گورکن کی جگہ پر غیر مسلم افراد نشہ کی حالت میں کام کرنے پر ٹی آرایس قائد سید مجاہد علی ببو، کانگریس قائدین عبود بن حمدان، عتیق،افضل، ڈبو، عرفات و دیگر نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے گورکن کی حیثیت سے صرف مسلم طبقہ سے تعلق رکھنے والوں کو ہی تقررکرنے کا مطالبہ کیااور قبرستان کے تقدس کو پامال کرنے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے سخت ناراضگی ظاہر کی۔ تفصیلات کے بموجب پولیس لائن میں کل محمد عبدالقدیر موظف اسسٹنٹ انجینئر کا انتقال ہواتھا اور ان کی تدفین میں سید مجاہد علی ببو و دیگر نوجوانوں نے شرکت کی تھی۔تجہیز و تدفین کے موقع پر گورکن کی حیثیت سے کام کرنے والاذمہ دار شخص کی حرکتوں پر ان افراد کو شک پیدا ہوا۔ جس پر انہوں نے اسے بازو لیکر بات چیت کی وہ نشہ کی حالت میں تھا اور اس دریافت کرنے پر غیر مسلم کی حیثیت سے ظاہر کیا۔ جس پر انہوں نے شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے یہاں پر موجودہ نگرانکار حافظ ابراہیم سے دریافت کرنے پر کوئی اطمینان بخش جواب نہ ملنے پر قبرستان کمیٹی کی کارکردگی پر سخت برہمی کا اظہار کیا۔ قبرستان کمیٹی کی جانب سے قبرکی کھدوائی کیلئے 800 روپئے حاصل کئے جاتے ہیں اور قبرستان کمیٹی کے نگرانکار اور گورکن تجہیز و تدفین کے فرائض کو انجام دیتے ہیں لیکن غیر مسلم افراد کی جانب سے تجہیز وتدفین کے عمل کو انجام دینے سے تقدس کا پامال ہورہا ہے۔ مجاہد علی ببو نے بتایا کہ سابق میں بھی قبرستان میں اس طرح کے واقعات پیش آئے تھے۔ بڑے پیمانے پر احتجاج کیا گیا تھا۔ اس وقت کے صدر یحییٰ ظفر نے عہدہ سے استعفیٰ دے دیا تھا ۔ موجودہ کمیٹی بھی کارکردگی میں سدھار پیدا نہیں کرسکی اور میت کے تقدس کو پامال کیا جارہا ہے لہذا اس خصوص میں رائے مشورہ حاصل کرتے ہوئے اقدامات کرنے کا ارادہ ظاہر کیا۔

TOPPOPULARRECENT