Wednesday , October 18 2017

قران

جو اﷲ کی راہ ہے وہ اﷲ جو مالک ہے ہر اُس چیز کا جو آسمانوں میں ہے اور جو زمین میں ہے ، خوب سُن لو! سب کاموں کا انجام اﷲ تعالیٰ کی طرف ہی ہے ۔ (سورۃ الشوریٰ ۔ آیت ۵۳)
اﷲ تعالیٰ کی جلالت شان کا ذکر فرمادیا کہ آسمانوں اور زمین میں جو کچھ ہے سب کا خالق و مالک وہی ہے اور اس میں ہر طرح کا تصرف کرنے کی بھی قدرت رکھتا ہے ۔ اس میں اطاعت گزار اور فرمانبردار بندوں کے لئے بشارت ہے اور سرکشوں اور نابکاروں کے لئے دھمکی اور سرزنش ہے ۔ بتایا جارہا ہے کہ سب مخلوقات کے دنیوی اور اخروی اُمور بارگاہ الٰہی میں انجام پاتے ہیں۔ ہر چھوٹے بڑے کام کی وہی تدبیر فرماتا ہے ۔ اس کی قضا و قدر کے بغیر کوئی پتہ بھی جنبش نہیں کرسکتا ۔ علامہ اسماعیل حقی رحمۃ اللہ علیہ لکھتے ہیں اہل تحقیق کے نزدیک تمام اوقات اور جملہ احوال میں ہر کام کی بازگشت اسی کی جناب میں ہے ۔ جب پردے اُٹھتے ہیں اور وسائط دور ہوتے ہیں تب اس مفہوم کا مشاہدہ نصیب ہوتا ہے ۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ ہرچیز کا آغاز بھی اﷲ تعالیٰ ہے اور انتہا بھی اسی تک ۔ اب چاہے کوئی اپنی مرضی اور اختیار سے اپنے آپ کو اس کی رضا میں فنا کردے ، ورنہ اضطرارًا تو ایسا ہوکر رہے گا ۔ عقل مندی کا تقاضہ تو یہ ہے کہ جس چیز سے مَفر نہ ہو اسے خوشی سے قبول کرلیا جائے۔ حضرت حسن بصری رحمتہ اللہ علیہ ایک جنازے کی تدفین میں شریک ہوئے ۔ جب اس پر مٹی ڈال دی گئی تو اتنا روئے کہ آنسوؤں سے مٹی تر ہوگئی پھر فرمایا اے لوگو ! دنیا کا انجام قبر ہے اور آخرت کی ابتدا قبر ہے ۔ اس جہان پر ناز کرنا کتنی حماقت ہے جس کا انجام قبر ہے اور اس جہاں سے کیوں نہیں ڈرتے ہو جس کی پہلی منزل قبر ہے ۔ ( رُوح البیان)

TOPPOPULARRECENT