Thursday , August 17 2017
Home / Top Stories / قرآنی تعلیمات کے بغیر دنیا وآخرت میں کامیابی ناممکن

قرآنی تعلیمات کے بغیر دنیا وآخرت میں کامیابی ناممکن

اسلامک بنکنگ و فینانس پر سمینار، جناب عامر علی خاں اور دیگر کا خطاب
حیدرآباد 5 جون (سیاست نیوز) قرآنی تعلیمات پر عمل کئے بغیر دنیا و آخرت میں کامیابی ناممکن ہے۔ زندگی کے ہر شعبہ حیات میں قرآن مجید اور حدیث نبوی ﷺ کو مشعل راہ بناتے ہوئے کامیابی کی منزلیں طے کرتے ہوئے مثال قائم کی جاسکتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار جناب عامر علی خاں نیوز ایڈیٹر روزنامہ سیاست نے کیا۔ انھوں نے سہل تجارت گروپ کی جانب سے اسلامک بینکنگ اور فینانس پر منعقدہ دو روزہ سمینار سے خطاب کیا جو آج اختتام کو پہونچا۔ اس موقع پر حیدرآباد کے معروف تاجر محمد سلیم انمول گروپ کے علاوہ اسلامک بینکنگ انسٹی ٹیوٹ کے ذمہ دار موجود تھے۔ جناب عامر علی خاں نے کہاکہ سہل تجارت گروپ کی پہل یقینا بہترین نتائج کا موجب بنے گی۔ انھوں نے کہاکہ سود کی لعنت سے پاک تجارت میں خیر و برکت ہوتی ہے اور دنیا کا معاشی نظام جس حال سے گزر رہا ہے اور وہ لوگ بھی اسی نظام عمل کی طرف حسرت سے دیکھتے ہیں۔ انھوں نے اپنے ترکی دورے کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا اور بتایا کہ ترکی میں سالانہ ایک کانفرنس منعقد کی جاتی ہے جس میں تاجر سے تاجر اور تاجر سے خریدار کی ملاقات ہوتی ہے اور تبادلہ خیال ہوتا ہے جس کے ذریعہ کاروبار میں وسعت کے علاوہ معاشی نظام بہتر ہوتا ہے اور پیسہ منجمد ہونے کے امکانات نہیں رہتے۔ جناب عامر علی خاں نے موجودہ حالات کے معاشی نظام اور ایسے موقع پر کئے جانے والے اقدامات کا قرآن کی روشنی میں حوالہ دیا اور بتایا کہ اللہ رب العزت نے سورہ رحمن کی پہلی آیتوں میں ہی وزن کا ذکر کیا ہے اور اللہ زکوٰۃ کو اسلام کا اہم رکن قرار دیا اور سود کو حرام کردیا۔ چونکہ سود کی مدد سے کئے جانے والے کاروبار میں خیر و برکت نہیں ہوتی۔ انھوں نے سہل تجارت گروپ اور اسلامک بنکنگ انسٹی ٹیوٹ کی کاوشوں کی سراہنا کی اور کہاکہ اس قسم کے کاروبار کی اگر حیدرآباد میں شروعات ہو تو یہ حیدرآبادی مسلمانوں کے لئے خوش آئند بات ہوگی۔ انھوں نے کہاکہ حیدرآباد کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ حیدرآباد سے شروع ہونے والی ہر تحریک کو کامیابی حاصل ہوتی ہے۔ انھوں نے کہاکہ سود سے پاک اسلامک طرز کی تجارت کو ضرور کامیابی حاصل ہوگی۔ انھوں نے کہاکہ اکثر مسلم تاجر ناکام ہوجاتے ہیں چونکہ پہلے رقم جمع کرنے کے بعد کاروبار کا آغاز ہوتا ہے اور جب کاروبار کو عروج پر پہونچانے اور تشہیر و سرمایہ کی ضرورت پڑتی ہے اس وقت ہمارے یہاں ورکنگ کیاپٹل نہیں ہوتا اور ورکنگ کیاپٹل کی کمی تجارت میں ناکامی کا سبب بنتی ہے۔ جناب عامر علی خاں نے کہاکہ کامیاب تاجر کے لئے موقع تلاش کرنے اور اس کا بھرپور استعمال کرتے ہوئے ترقی حاصل کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ انھوں نے مسلم تاجروں کو مشورہ دیا وہ تجارت میں اسلامک پارٹنرشپ یا پھر کسی بھی بڑے تاجر گروپ سے اشتراک کرتے ہوئے اپنے کاروبار کو ترقی دے سکتے ہیں۔ انھوں نے سمینار میں شریک مسلم تاجروں پر زور دیا کہ وہ قرآن مجید کی روشنی میں اپنے مسائل کا حل اور اپنی کامیابی تلاش کریں۔ اس موقع پر محمد سلیم رکن قانون ساز کونسل و انمول گروپ نے اپنے خطاب میں اپنی ترقی اور محنت کا تذکرہ کیا اور تاجروں کو مفید مشورے دیئے۔ انھوں نے بتایا کہ وہ ایک چھوٹے تاجر تھے اور اللہ رب العزت کے فضل و کرم سے آج ریاستی، قومی اور بین الاقوامی سطح پر ان کا کاروبار ہے اور اللہ کے فضل و کرم سے انھیں دن بہ دن ترقی حاصل ہورہی ہے۔ محمد سلیم نے بتایا کہ ہوٹل اور گوشت کے کاروبار میں انھیں کافی ترقی ہوئی ہے۔ اس موقع پر عاصم فاروقی نے سہل تجارت گروپ کے اغراض و مقاصد پر تفصیلی روشنی ڈالی۔ محمد شریف ذمہ دار اسلامک بینکنگ نے بھی اس موقع پر مخاطب کیا۔ سمینار میں تاجروں کی کثیر تعداد موجود تھی۔

TOPPOPULARRECENT