Thursday , September 21 2017
Home / پاکستان / قربانی کا بکرا بنانے کے خلاف امریکہ کو پاکستانی انتباہ

قربانی کا بکرا بنانے کے خلاف امریکہ کو پاکستانی انتباہ

اسلام آباد ۔ /24 اگست (سیاست ڈاٹ کام) پاکستان نے آج امریکہ کو انتباہ دیا کہ افغانستان کی جنگ میں اسے ’’قربانی کا بکرا‘‘ نہ بنایا جائے ۔ صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ کے اس تبصرہ کو مسترد کردیا گیا کہ پاکستان دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کی نشوونما کررہا ہے ۔ قومی صیانتی کمیٹی کے 5 گھنٹے طویل اجلاس کے بعد وزیراعظم پاکستان شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پاکستان کے بارے میں امریکہ کا موقف ’’سنگین معاملہ ‘‘ ہے ۔ اعلیٰ سطحی سیول اور فوجی قیادت نے امریکہ کو انتباہ دیا کہ پاکستان کو قربانی کا بکرا نہ بنایا جائے کیونکہ اس سے افغانستان میں استحکام برقرار رکھنے میں مدد نہیں ملے گی ۔ کمیٹی نے مکمل طور پر ان واضح الزامات کو مسترد کردیا جو پاکستان میں لگائے گئے ہیں اور کہا کہ درحیقیقت ہمارے فوری پڑوسی ملک کی ایماء پر یہ بیان دیا گیا ہے ۔ سرکاری بیان کے بموجب پاکستان افغانستان کے امن و استحکام سے کوئی حقیقی دلچسپی نہیں رکھتا ۔ کمیٹی نے کہا کہ پاکستان کو افغانستان میں طویل خانہ جنگی سے نمٹنا ہے جس کے نتیجہ میں پناہ گزینوں کا سیلاب ، منشیات اور فوجی اسلحہ پاکستان پہونچ رہے ہیں۔ جس سے پاکستان دشمن دہشت گرد گروپس کو پاکستانی سرزمین میں حملے کرنا کا موقع مل رہا ہے ۔ صدر امریکہ ڈونالڈ ٹرمپ نے پاکستان پر الزام عائد کیا تھا کہ وہ بین الاقوامی دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہوں کو پروان چڑھا رہا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT