Wednesday , June 28 2017
Home / مذہبی صفحہ / قرب الہٰی کا ذریعہ

قرب الہٰی کا ذریعہ

اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے کہ ’’بندہ نفل عبادتوں کے ساتھ تقرب حاصل کرتا رہتا ہے، یہاں تک کہ میں بھی اُس کو اپنا محبوب بنا لیتا ہوں، حتی کہ میں اس کے کان، آنکھ، ہاتھ اور پاؤں بن جاتا ہوں‘‘۔ بندہ جب کثرت عبادت سے اللہ تعالیٰ کا مقرب بن جاتا ہے تو اللہ تعالیٰ اس کے اعضاء کا حافظ بن جاتا ہے اور آنکھ، کان وغیرہ سب مرضی آقا کے تابع ہو جاتے ہیں۔ اللہ تعالیٰ کا ارشاد ہے کہ ’’جو شخص میری طرف چل کر آتا ہے تو میں اُس کی طرف دوڑکر جاتا ہوں‘‘۔ مقصود یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ اپنے یاد کرنے والوں کی طرف اُن کی طلب اور سعی سے زیادہ توجہ فرماتا ہے۔ کلام الہٰی (قرآن مجید) چوں کہ سراسر ذکر ہے اور اس کی کوئی آیت ذکر و توجہ الی اللہ سے خالی نہیں ہے، اس لئے یہی بات اس میں بھی پائی جاتی ہے۔ یقیناً قرآن پاک کی تلاوت بھی تقرب الہٰی کا ذریعہ ہے۔ (مرسلہ)

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT