Wednesday , September 20 2017
Home / کھیل کی خبریں / قطر میں روایتی عرب ٹوپی ’القحفیہ‘ کے طرز پر الثمامہ اسٹیڈیم کی تعمیر

قطر میں روایتی عرب ٹوپی ’القحفیہ‘ کے طرز پر الثمامہ اسٹیڈیم کی تعمیر

حیرت انگیز تعمیری فن پارہ کا نمونہ جاری ، فیفا ورلڈ کپ 2022ء کی تیاریوں میں شدت
دوحہ۔ 20 اگست (سیاست ڈاٹ کام) تیل اور قدرتی گیاس سے مال مال خلیجی عرب کے ملک ’قطر‘ نے اپنے پڑوسیوں کے ساتھ جاری شدید سفارتی اختلافات کے باوجود فیفا ورلڈ کپ 2022ء کیلئے اپنی پرجوش تیاریوں کو جاری رکھتے ہوئے ایک انتہائی خوبصورت اور منفرد انداز کا اسٹیڈیم تعمیر کرنے کا منصوبہ کا آج اعلان کیا۔ مجوزہ اسٹیڈیم جس کا نمونہ اتوار کو ’الثمامہ اسٹیڈیم‘ مشرق وسطیٰ اور بالخصوص خلیج عرب میں پہلی مرتبہ ہونے والے دنیا کے سب سے بڑے فٹبال ٹورنمنٹ کی تیاریوں سے متعلق 5 ارب برطانوی پاؤنڈ تقریباً 7.5 ارب امریکی ڈالر کے ایک خطیر مالیتی پراجیکٹ کا حصہ ہے۔ اس اسٹیڈیم میں 40,000 شائقین کے بیٹھنے کی گنجائش ہوگی اور انتہائی اعلیٰ و عصری ٹیکنالوجی پر مبنی یہ اسٹیڈیم اہم عالمی تعمیری فن پاروں میں شمار کیا جائے گا۔ اس صحرائی علاقہ میں جھلسادینے والی گرمی سے بچنے کیلئے انتہائی قیمتی ایرکنڈیشننگ سسٹم سے آراستہ کیا جارہا ہے جس کے ذریعہ درجہ حرارت کو 18 ڈگری سینٹی گریڈ تک کم رکھا جاسکتا ہے۔ الثمامہ کے علاوہ دیگر چار اسٹیڈیم بھی تعمیر کرنے کے منصوبوں کا بھی آج ہی اعلان کیا گیا جن میں دو اسٹیڈیم ’فیفا فائنل‘ کے لئے مختص رہیں گے۔ قطر کے دارالحکومت دوحہ سے 4 میل کے فاصلے پر واقع الثمامہ اس ملک میں زیرتعمیر سات اسٹیڈیمس میں شامل ہے۔دوحہ کے ’الخلیفہ اسٹیڈیم کی تعمیر اس سال مئی میں مکمل ہوچکی ہے۔ البیت اور الوکرہ اسٹیڈیمس کی تعمیر 2018ء میں اور الریان کی تعمیر 2019ء میں مکمل ہوگی۔ قطر کے ایک آرکیٹیکٹ نے ’الثمامہ اسٹیڈیم‘ کا نقشہ تیار کیا ہے۔ مشرق وسطیٰ میں اسرائیل کے بعد امریکہ کے دوسرا سب سے اہم حلیف اور ساجھیدار ملک ’’سعودی عرب‘‘ کے علاوہ متحدہ عرب امارات، بحرین جو خود بھی امریکہ کے حلیف ہیں، اپنے ہی برادر ملک قطر پر دہشت گردی کے الزامات عائد کرتے ہوئے سفارتی تعلقات منقطع کرلئے ہیں۔ علاوہ ازیں زمینی و فضائی رابطے بند کردیئے گئے ہیں۔ قطر نے دہشت گردی کے الزامات کی سختی سے تردید کی ہے۔ پڑوسیوں سے ٹرانسپورٹ رابطے منقطع ہونے کے بعد قطر اب ترکی اور ایران سے براہ سلطنت عمان بحری جہازوں کے ذریعہ غذائی اشیاء برآمد کررہا ہے۔ علاوہ ازیں فیفا ورلڈ کپ کی تیاریوں کے لئے بھی ان ہی راستوں سے تعمیری ساز و سامان پہنچایا جارہا ہے۔ امیر قطر شیخ تمیم بن حمدالثانی نے اپنے ملک میں انفراسٹرکچر کی توسیع و ترقی کے لئے 200 ارب ڈالر کا منصوبہ بنایا ہے اور یہ آٹھ اسٹیڈیم بھی اس پراجیکٹ کا حصہ ہیں۔

TOPPOPULARRECENT