Monday , September 25 2017
Home / شہر کی خبریں / قلیل وقت میں زیرالتواء مقدمات کی یکسوئی

قلیل وقت میں زیرالتواء مقدمات کی یکسوئی

آلٹرنیٹیو ڈسپیویٹ ریولیولشن کارآمد ثابت، جسٹس وی ناگرجناریڈی
حیدرآباد ۔ 20 اگست (سیاست نیوز) چیف جسٹس آف ہائیکورٹ برائے ریاست آندھراپردیش و تلنگانہ جسٹس سی وی ناگرجنا ریڈی نے کہاکہ زیرالتواء مقدمات کی کم وقت میں آسان انداز سے یکسوئی کیلئے آلٹرنیٹو ڈسپیوٹ ریولوشن (آئی سی اے ڈی آر) مددگار ثابت ہورہا ہے۔ چیف جسٹس نے آج یہاں تلنگانہ لیگل سرویسیس اتھاریٹی حیدرآباد اور (آئی سی اے ڈی آر) کے اشتراک سے منعقدہ ایک روزہ تربیتی کورس کا افتتاح کیا۔ ججس کیلئے منعقدہ اس تربیتی پروگرام میں چیف جسٹس نے کہا کہ اے ڈی آر کے طریقہ کار کی مدد سے مقدمات کی جلد یکسوئی ممکن ہوپارہی  ہے اور اس طریقہ کار سے مقدمات جلد از جلد حل کئے جاسکتے ہیں۔ انہوں نے اس درمیان اے ڈی آر کے طریقہ سے حل شدہ مقدمات کا تذکرہ بھی کیا۔ بعدازاں آئی سی اے ڈی آر کے ریجنل انچارج و سکریٹری مسٹر جے ایل این مورتی نے بتایا کہ سپریم کورٹ کے احکامات اور بتائے ہوئے طریقہ کار کے مطابق ججوں کی تربیت جاری ہے اور مرحلہ وار سطح پر مقدمات کی جلد اور عدالتوں کے باہر یکسوئی کے طریقہ کار کو عام کرنے کے اقدامات جاری ہیں تاکہ عدالتوں میں زیرالتواء مقدمات کی تعداد میں کمی ہوسکے جس کے سبب وقت اور خرچ دونوں کی بچت ہوسکے۔ مسٹر مورتی نے بتایا کہ کئی تنازعات طویل عرصہ سے زیردوران ہیں اور اس کے سبب پیدا شدہ مشکلات کو آسان کرنے کیلئے قانونی دائرہ میں رہتے ہوئے یکسوئی کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ آج ایک روزہ تربیتی پروگرام میں سٹی سیول کورٹ، کریمنل کورٹ اور سکندرآباد اسمال کازیز کورٹ کے ججس موجود تھے۔ ججوں کو دی جانے والی اس تربیت مقدمات کی شروعات کے عمل سے اس کے اختتام کے عمل بالخصوص آئی سی اے ڈی آر کے نظام سے مقدمہ کو کیسے جوڑا جائے اور یکسوئی کس طرح عمل میں لائی جاسکتی ہے۔ اس پر تفصیلی تربیت دی گئی۔ انہوں نے بتایا کہ آئندہ ماہ 24 تاریخ کو ضلع رنگاریڈی کے ججوں کا تربیتی پروگرام منعقد ہوگا۔ اس موقع پر لیگل سرویس اتھاریٹی تلنگانہ اور آئی سی اے ڈی آر کے دیگر عہدیدار موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT