Sunday , August 20 2017
Home / Top Stories / قومیت پسندی بی جے پی کی پہچان : نریندر مودی

قومیت پسندی بی جے پی کی پہچان : نریندر مودی

ترنگا یاترا کے ملک بھر میں اچھے اثرات، ہم ترقی کی راہ پر کاربند لیکن بعض عناصر عوام کی توجہ ہٹانے میں مصروف

نئی دہلی۔ 23 اگست (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ قومیت پسندی ، بی جے پی کی شناخت ہے۔ انہوں نے ریاستی بی جے پی یونٹس کے کور گروپس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی وزراء اور پارٹی قائدین نے ملک کی 70 ویں یوم آزادی کے موقع پر ایک ہفتہ طویل جو ترنگا یاترا شروع کی، اس کے ملک میں اچھے اثرات مرتب ہوئے۔ انہوں نے کہا کہ اس یاترا نے قومی اتحاد ، سالمیت اور ہم آہنگی کا پیام ایسے وقت عام کرنے میں اہم رول ادا کیا جبکہ مخالف طاقتیں اس کے برعکس کام کررہی ہیں۔ مرکزی وزیر اننت کمار نے یہ بات بتائی۔ زعفرانی جماعت نے کشمیر میں جاری بدامنی، بنگلورو میں ایک پروگرام کے دوران موافق آزادی نعرے اور ایمنسٹی کے خلاف غداری کا مقدمہ اور جے این یو تنازعہ کے پس منظر میں قومی پسندی کا موضوع اٹھایا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ وزیراعظم نے اگرچہ ان موضوعات کا راست ذکر نہیں کیا لیکن انہوں نے یہ بات کہی کہ قومیت پسندی بی جے پی کی شناخت ہے۔ بعدازاں بی جے پی نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے مودی کے حوالے سے کہا کہ ہم ترقی کے لئے مسلسل کام کررہے ہیں لیکن بعض عناصر جو ایسا نہیں چاہتے، عوام کی توجہ ہٹانے کی کوشش کررہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم عام آدمی کو یہ بتانا چاہتے ہیں کہ ہمارا واحد مقصد قوم کی تعمیر ہے۔

مودی کا ایک اور اسٹائل ، کانگریس کا ردعمل
کانگریس نے وزیراعظم کے قومیت پسندی کے ریمارکس پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے اپنا مقصد تبدیل کردیا ہے۔ پارٹی کو قومیت پسندی نہیں بلکہ جو وعدے کئے گئے اس کی بناء عوام نے منتخب کیا لیکن ان وعدوں کو اب تک پورا نہیں کیا۔ اے آئی سی سی انچارج رندیپ سرجے والا نے کہا کہ بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ اس نے ملک کیلئے کوئی قربانی نہیں دی اور قومیت پسندی کے چمپین کی حیثیت سے پارٹی پر کبھی بھروسہ نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت میں آزادانہ روایات پر حملے ہورہے ہیں اور قانون کا مذاق اڑایا جارہا ہے۔ نریندر مودی کا قومیت پسندی کا تذکرہ بھی اسی طرح کا ایک اسٹائل ہے جو انہوں نے ’’اچھے دن‘‘ کے بارے میں دیا تھا اور وہ قوم کے روبرو بے نقاب ہوچکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم مودی جی کو یہ یاد دلانا چاہتے ہیں کہ قومیت پسندی نے انہیں اقتدار حوالے نہیں کیا بلکہ ترقی، روزگار، اچھی حکمرانی، غربت کے خاتمہ، افراط زر پر قابو اور سب کیلئے ’’اچھے دن‘‘ کا جو انہوں نے وعدہ کیا تھا، اس کی بناء عوام نے انہیں اقتدار سونپا ہے۔ وزیراعظم نے ان سب کو فراموش کردیا لیکن ملک کے عوام کو اس بیان میں یہ ساری باتیں نظر آرہی ہیں۔ سرجے والا نے کہا کہ مودی حکومت کے دو سال پورے ہونے کے بعد بھی مسائل جوں کے توں ہیں۔

TOPPOPULARRECENT