Saturday , July 22 2017
Home / Top Stories / قومی اقدار و ثقافت کیخلاف بولنے والوں سے دوری بہتر

قومی اقدار و ثقافت کیخلاف بولنے والوں سے دوری بہتر

آزاد ملک میں ہر کسی کو تمام تر معاملوں میں دستوری حد کے ساتھ آزادی حاصل : وینکیا نائیڈو
نئی دہلی ۔ 6جولائی ( سیاست ڈاٹ کام ) مرکزی وزیر ایم وینکیا نائیڈو نے آج کہا کہ جو لوگ قومی اصولوں ‘ اقدار اور ثقافت کے خلاف بات کرتے ہیں اور دوسروں پر اپنی رائے تھوپتے ہیں ‘ ایسے لوگوں سے دور ہی رہنا چاہیئے ۔ نائیڈو کا یہ بیان دو روز قبل جموں و کشمیر کے ایک وزیر کے ریمارکس کے پس منظر میں سامنے آیا ہے جنہوں نے اسمبلی میں نیشنل کانفرنس کے ایک لیڈر سے کہا تھا کہ وہ انہیں مارپیٹ کر ان کا کچومر نکال سکتے ہیں ۔ نائیڈو نے بھارتیہ جن سنگھ کے بانی آنجہانی شیاما پرساد مکرجی کا حوالہ بھی دیا جو یہی خیالات کا اظہار کرتے تھے ۔ بھارتیہ جن سنگھ کے بعد ہی بی جے پی وجود میں آئی ۔ نائیڈو نے کہا کہ مکرجی نے ملک کی ایکتا کیلئے لڑائی کی اور ہندوستان ساتھ جموں و کشمیر کی وابستگی کیلئے اپنی جان قربان کی ۔ ہمیں قومی یکجہتی کی ضرورت کے تعلق سے شیاما پرساد سے تحریک حاصل کرنا چاہیئے ۔ ہمیں لازمی طور پر ایسے لوگوں کو نظرانداز کردینا چاہیئے جو شور کرتے ہیں ‘ قومی اصولوں ‘ اقدار ‘ کلچر کے خلاف بات کرتے ہیں اور پھر اپنی رائے ہم پر مسلط کرنے کی کوشش کرتے ہیں ۔ یہ رویہ قابل قبول نہیں ہے ۔ وہ پرسار بھارتی ریجنل نیوز یونٹ کی کانفرنس سے مخاطب تھے ۔ وزیر اطلاعات و نشریات نے مزید کہا کہ ہندوستان آزاد ملک ہے اور ہر کسی کو آزادی حاصل ہے لیکن دستوری حد موجود ہے اور کسی کو بھی کسی کی آزادی چھیننے کا حق نہیں ‘ یہ آزادی زبان کی ہوسکتی ہے ‘ کلچر کی ہوسکتی اور غذائی عادتوں کی بھی ہوسکتی ہے ۔ کسی بھی دیگر شخص کو اس بارے میں دوسروں پر حکم چلانے کا حق حاصل نہیں ۔ یہ نہایت واضح ہے اور یہی حکومت کی پالیسی ہے اور کوئی بھی انسان دوسروں کو نقصان پہنچاتے ہوئے خود کو عظیم نہیں کہہ سکتا ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT