Tuesday , September 19 2017
Home / شہر کی خبریں / قومی شاہراہوں کے 800 انتہائی پُر خطر مقامات پر حادثات

قومی شاہراہوں کے 800 انتہائی پُر خطر مقامات پر حادثات

خطرناک راستوں کی درستگی کیلئے 11000 کروڑ روپئے مختص ، سڑک حادثوں میں سالانہ 1.5 لاکھ اموات : گڈکری
وشاکھاپٹنم /20 اگست ( سیاست ڈاٹ کام ) مرکزی وزیر ٹرانسپورٹ نتن گڈکری نے آج انکشاف کیا کہ ملک بھر کی قومی شاہراہوں پر تقریباً 800 سیاہ داغ ( حادثات کا سبب بننے والے پُر خطر خطے ) ہیں اور حادثات کی شرح کو کم کرنے کیلئے ان کی نئی صورت گری کی جائے گی ۔ گڈکری نے ’ روڈ سیفٹی ‘ پر دو روزہ ورکشاپ کا افتتاح کرتے ہوئے کہا کہ قومی شاہراہوں پر 786 پُر خطر مقامات کی نشاندہی کی گئی ہے ۔ جنہیں 11,000 کروڑ روپئے کے مصاف سے درست کیا جائے گا ۔ انہو ںنے کہا کہ ملک میں سڑک حادثات کے سبب سالانہ 1.5 لاکھ اموات ہوتی ہیں اور تمام ریاستوں کے وزرائے ٹرانسپورٹ کے تعاون سے ان حادثات کی شرح کو مستقبل قریب میں 50 فیصد کی حد تک گھٹایا جاسکتا ہے ۔ گڈکری نے سڑک حادثات میں اضافہ پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ 70 تا 80 فیصد حادثات انجینئیرنگ کی خامیوں اور نقائص کی وجہ سے پیش آتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ سڑکوں کی تعمیر میں بہترین انجینئیرنگ نظام کو یقینی بنانے کیلئے بہترین ٹکنالوجی سے استفادہ کیا جائیگا ۔ وزیر ٹرانسپورٹ نے مزید کہا کہ گاڑیوں کے رجسٹریشن ، ان کی حالت کی توثیق و تصدیق کے علاوہ ڈرائیونگ لائیسنس کی اجرائی کیلئے رشوت سے پاک صاف و شفاف طریقہ کار اختیار کرنے کیلئے حکومت کی طرف سے تمام ضروری اقدامات کئے جارہے ہیں ۔ مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو نے کہا کہ سڑک حادثات پر کنٹرول کیلئے تعلیم اور انجیئنیرنگ لازمی ہے ۔ انہوں نے بچوں اور گاڑی چلانے والوں کو ٹریفک قواعد سے واقف کروانے کی غیر معمولی اہمیت کو بھی اجاگر کیا ۔ آندھراپردیش کے چیف منسٹر این چندرا بابو نائیڈو نے سڑک حادثات پر کنٹرول کیلئے ان کی حکومت بھی دیگر ریاستوں کی طرف سے اختیار کردہ بہترین طریقہ کار پر عمل آوری کرے گی ۔ اس ورکشاپ میں 18 ریاستوں کے وزرائے ٹرانسپورٹ کے علاوہ مرکزی و ریاستی حکومتوں کے اعلی عہدیداروں ، ورلڈ بینک کے ذمہ داروں اور بیرونی ممالک کے مندوبین نے بھی شرکت کی ۔

TOPPOPULARRECENT