Saturday , August 19 2017
Home / شہر کی خبریں / قیمتوں میں اضافہ کا اعتراف

قیمتوں میں اضافہ کا اعتراف

چور بازاری کے خلاف حکومت کے کئی اقدامات: ایٹالہ راجندر
حیدرآباد۔ 16 ۔ مارچ ( سیاست نیوز) وزیر فینانس ای راجندر نے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافہ کا اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ حکومت قیمتوں میں کمی کیلئے کئی ایک اقدامات کر رہی ہے ۔ اشیائے ضروریہ کی چور بازاری اور ذخیرہ اندوزی کے خلاف باقاعدہ مہم کا آغاز کیا گیا ہے جس کے نتیجہ میں قیمتوں میں کافی حد تک کمی واقع ہوئی ہے۔ وزیر فینانس آج تلنگانہ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران اپوزیشن ارکان کی تشویش پر جواب دے رہے تھے۔ اپوزیشن ارکان نے قیمتوں میں اضافہ ، غریب اور متوسط طبقات کو مہنگائی سے دشواری پر تشویش کا اظہار کیا اور حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ ذخیرہ اندوزوں کے خلاف سخت کارروائی کریں۔ ای راجندر نے کہا کہ دال اور خوردنی تیل کی قیمتوں میں کسی قدر اضافہ ابھی بھی برقرار ہے جبکہ بعض دیگر اشیاء کی قیمتوں میں کمی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کسانوں کو مختلف رعایتوں کی فراہمی کے ذریعہ پیداوار میں اضافہ کی کوشش کی جارہی ہے جس سے قیمتوں پر قابو پایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چور بازاری کے خلاف کئی اقدامات کئے گئے، دھاوے اور اشیائے ضروریہ کو بڑی مقدار میں ضبط کیا گیا۔ چیف سکریٹری کی نگرانی میں قیمتوں پر قابو پانے کیلئے 12 مرتبہ اعلیٰ سطحی اجلاس منعقد کیا گیا ۔ انہوں نے بتایا کہ جاریہ سال مختلف گوداموں پر 7218 دھاوے کرتے ہوئے 2501 مقدمات درج کئے گئے۔ 1252 راشن کی دکانات پر دھاوا کرتے ہوئے اشیائے ضروریہ کی چور بازاری اور غیر قانونی فروخت کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا۔ 115 افراد کو گرفتار کرتے ہوئے 244 ایف آئی آر درج کئے گئے۔ وزیر فینانس نے کہا کہ ذخیرہ اندوزوں کے خلاف سخت کارروائی کے طور پر 6 افراد کو پی ڈی ایکٹ کے تحت بک کیا گیا۔ انہوں نے بتایا کہ ریاست میں 2.81 کروڑ افراد کو حکومت رعایتی قیمت پر چاول سربراہ کررہی ہے۔ مزید 70 تا 80 لاکھ خاندانوں کو یہ سہولت فراہم کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سفید راشن کارڈ پر دو روپئے فی کیلو کے حساب سے 5 کیلو گیہوں سربراہ کرنے کی تجویز ہے۔ انہوں نے کہا کہ دالوں اور تیل کی قیمت میں اضافہ کا رجحان دیکھا گیا۔ اگست 2015 ء تا اکتوبر 2015 پیاز کی قیمت میں اضافہ کے موقع پر مارکیٹنگ ڈپارٹمنٹ نے 54277 کنٹل پیاز خریدتے ہوئے اسے 20 روپئے فی کیلو کے حساب سے سربراہ کیا ۔ انہوں نے بتایا کہ ملز اور ٹریڈرس پر دھاوے کرتے ہوئے ذخیرہ اندوزی کو روکنے کی کوشش کی گئی ۔

TOPPOPULARRECENT