Sunday , October 22 2017
Home / دنیا / لا30 لاکھ سال قدیم’ہاتھی دانت‘ دریافت

لا30 لاکھ سال قدیم’ہاتھی دانت‘ دریافت

جہلم 22 فروری (سیاسٹ ڈاٹ کام ) پاکستانی پنجاب کے شہر جہلم سے محققین نے تقریباً 30 لاکھ سال قدیم ہاتھی دانت کی جوڑی دریافت کرلی۔لاہور میں واقع پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ حیوانیات کے پروفیسر ایم اختر نے کہا ہے یہ بہت بڑی دریافت ہے۔ ہم نے ہاتھی کے دانتوں کی ایسی جوڑی پہلی مرتبہ دریافت کی ہے، جس کا اوپری اور نیچے کا حصہ جبڑے کے ساتھ جڑا ہوا ہے۔6 فٹ سے زائد لمبے یہ دانت لاکھوں سال پرانے ہاتھی کے خاندان انانکس سے تعلق رکھتے ہیں۔ پروفیسر اختر، جو جہلم کے قریب دینہ کے علاقے میں اپنی ٹیم کے ہمراہ تحقیق میں مصروف ہیں انہوں نے کہاہے کہ میوزیم ہاتھی دانتوں، گینڈے کے سینگوں اور مگرمچھوں کے دانتوں سے بھرے ہوئے ہیں تاہم اب تک مکمل ڈھانچہ دریافت نہیں کیا جاسکا۔ پروفیسر اختر نے مزید کہا ہے علاقے میں زیرِ زمین پرتوں کی حرکت کے باعث یہاں مدفون جانوروں کا مکمل ڈھانچہ دریافت کرنا تقریباً ناممکن ہے۔ اس سے قبل گجرات ۔ کھاریاں کے علاقے سے 11 لاکھ سال قدیم  ایک ہاتھی دانت دریافت کیا گیا تھا۔ 11 لاکھ سال قدیم  یہ دانت ہاتھیوں کی معدوم ہونے والی نسل اسٹیگوڈن سے تعلق رکھتا تھا۔پروفیسر اختر نے مزید کہا ہے کہ ہاتھوں کے یہ دونوں خاندان انانکس اور اسٹیگوڈن ایک ہی نسل سے تعلق رکھتے ہیں۔ واضح رہے کہ انانکس  نسل کے ہاتھی دانت پہلی مرتبہ تین سال قبل پنجاب یونیورسٹی کے ایک طالب علم نے دریافت کئے تھے۔ پروفیسر اختر کے مطابق یہ صرف ایک حصہ تھا اور بعد ازاں یونیورسٹی کی جانب سے کھدائی کے لیے مزید فنڈز ملنے کے بعد 16 فروری 2016 کو مکمل دریافت کی گئی۔ بدقسمتی سے شرپسند بھی اس نئی تحقیق کی جانب متوجہ ہورہے ہیں اور 3 روز قبل انہوں نے اس دریافت کو چرانے کی کوشش کی۔ شعبہ حیوانیات کے اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر عبدالمجید کے مطابق ان دانتوں کی صحیح تاریخ کا تعین لیبارٹری ٹسٹ کے بعد کیا جائے گا۔ تاہم انہوں نے کہا ہیکہ اس علاقے میں چٹانیں بننے کی تاریخ کے حساب سے ہاتھی دانت کی عمر اندازاً30   لاکھ سال قدیم بتائی گئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT