Tuesday , October 24 2017
Home / جرائم و حادثات / لشکر طیبہ سے ربط کے ملزم کی جیل سے رہائی

لشکر طیبہ سے ربط کے ملزم کی جیل سے رہائی

حیدرآباد ۔ 10 اکٹوبر ۔ (سیاست نیوز)لشکر طیبہ سے رابطہ اور دہشت گردانہ سرگرمیوں میں مبینہ طورپر ملوث ہونے کے الزام میں گرفتار ضیاء الحق آج ورنگل جیل سے سات سال کی سزاء مکمل ہونے پر رہا ہوگئے ۔ ضیاء الحق کو 4 مئی 2010 ء میں بھوانی نگر پولیس نے گرفتار کرتے ہوئے اُسے اسپیشل انوسٹی گیشن ٹیم کے حوالے کردیا تھا اور بعد ازاں قومی تحقیقاتی ایجنسی ( این آئی اے ) نے دہشت گرد تنظیموں سے رابطہ کے الزام میں گرفتار کیا تھا ۔ ضیاء الحق کو این آئی اے کی خصوصی عدالت نے یکم جنوری سال 2014 میں ایکسپلوزیو ایکٹ کے تحت قصوروار پائے جانے پر 7 سال کی سزاء سنائی ، جس کے بعد اُسے چیرلہ پلی جیل سے ورنگل جیل منتقل کردیا گیا۔ اسی دوران ضیاء الحق کو اسپیشل انوسٹی گیشن ٹیم نے مشیرآباد اوڈین تھیٹر دھماکہ کیس میں گرفتار کرتے ہوئے مقدمہ چلایا تھا ، لیکن نامپلی کریمنل کورٹ کے فرسٹ ایڈیشنل میٹرو پولیٹن سیشن جج نے اس کیس سے ضیاء الحق کو بری کردیا تھا ۔ دونوں مقدمات کی پیروی نامپلی کریمنل کورٹ کے سینئر ایڈوکیٹ محمد مظفراﷲ خان شفاعت نے کی اور آج رہائی  کے بعد ضیاء الحق اور اُس کے ارکان خاندان نے مجلس بچاؤ تحریک کے دفتر پہونچ کر سابق کارپوریٹر جناب امجداﷲ خان خالد سے ملاقات کی اور نازک حالات میں اُن کا ساتھ اور قانونی مدد دینے پر شکریہ ادا کیا۔

TOPPOPULARRECENT