Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / لوک پال کو مؤثر بنانے کیلئے پارلیمانی پینل کی سفارشات پیش

لوک پال کو مؤثر بنانے کیلئے پارلیمانی پینل کی سفارشات پیش

نئی دہلی ۔ 7 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) پارلیمانی کمیٹی نے کارکردگی ایک دوسرے کے ساتھ خلط ملط ہوجانے کا حوالہ دیتے ہوئے سنٹرل ویجلنس کمیشن (سی وی سی) اور سی بی آئی کی اینٹی کرپشن ونگ کو باہمی طور پر راست لوک پال کے تحت کام کرنے کی سفارش کی ہے تاکہ کرپشن کے مقدمات سے نمٹا جاسکے۔ کمیٹی نے لوک سبھا میں اپوزیشن کا مسلمہ لیڈر نہ ہونے کی صورت میں واحد سب سے بڑی جماعت کے لیڈر کو بحیثیت رکن سلیکشن پینل شامل کرنے کی بھی تجویز پیش کی۔ یہ پینل لوک پال کے صدرنشین اور ارکان کا انتخاب کرے گا۔ اگر پارلیمنٹ میں ان سفارشات کو قبول کرلیا جائے تو کانگریس لیڈر ملک ارجن کھرگے کو وزیراعظم کی زیرقیادت لوک پال سلیکشن کمیٹی کا حصہ بننے کی راہ ہموار ہوگی۔ کمیٹی کی یہ رائے ہے کہ سی وی سی اور سی بی آئی کا جہاں تک تعلق ہے ان دونوں کو لوک پال کے ساتھ پوری طرح باہم مربوط کیا جائے۔ لوک پال اور سی وی سی کی کارکردگی کا واضح تعین کیا جائے اور سی وی سی اور لوک پال کے اختیارات و کارکردگی کے سلسلہ میں جو ٹکراؤ ہورہا ہے اس سے مؤثر طور پر نمٹا جائے۔ اس طرح لوک پال کے ذریعہ تحقیقات، استغاثہ کے معاملات سے نمٹا جاسکتا ہے۔ پینل نے اپنی یہ رپورٹ پارلیمنٹ کے دونوں ایوان میں پیش کردی ہے۔ کانگریس رکن پارلیمنٹ ای ایم سدرشنا نچیفن کی زیرقیادت پارلیمانی اسٹانڈنگ کمیٹی برائے پرسونل و ازالہ عوامی شکایات، لا اینڈ جسٹس کا یہ احساس ہیکہ عوامی خدمت گذاروں بشمول ملازمین اور سیاستدانوں کے اثاثہ جات کا برسرعام انکشاف ضروری نہیں ہے۔ پینل نے موجودہ قوانین پر نظرثانی کی سفارش کی جو انگریز دور کے شبہات اور عدم اعتماد کی عکاسی کرتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT