Thursday , August 24 2017
Home / Top Stories / لٹیروں اور غنڈوں کی سرپرستی کیلئے ایس پی اور بی ایس پی میں ملی بھگت

لٹیروں اور غنڈوں کی سرپرستی کیلئے ایس پی اور بی ایس پی میں ملی بھگت

اُترپردیش میں بی جے پی برسراقتدار آنے پر مواخذہ کیا جائے گا : امیت شاہ
سونے بھدرا (اُترپردیش)۔8 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) بہوجن سماج پارٹی اور سماج وادی پارٹی پر اُترپردیش کے سیاسی ماحول کو آلودہ کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے صدر بی جے پی امیت شاہ نے آج کہا ہے کہ یہ دونوں جماعتیں باہمی سازباز کے ذریعہ مجرموں اور اسکامس میں ملوث افراد کی سرپرستی کررہی ہیں۔ بی جے پی کی تیسری پریورتن ریالی کو جھنڈی بتاکر روانہ کرنے سے قبل مخاطب کرتے ہوئے امیت شاہ نے بتایا کہ وہ جب یہاں آرہے تھے تو انہیں پہاڑوں میں بڑے بڑے غار دکھائی دے رہے تھے۔ اس خصوص میں دریافت کرنے پر بتایا گیا کہ یہاں کے پتھر سے مایاوتی کے مجسمہ تیار کرنے کیلئے لے کر چلے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حکمران سماج وادی پارٹی میں ملائم سنگھ یادو کے ایک بااعتماد رفیق ہیں، جنہیں غیرقانونی کانکنی اور عوام کو لوٹنے کا کنٹراکٹ دیا گیا ہے۔ اگر بی جے پی برسراقتدار آئے گی تو لوٹ مار ختم کردی جائے گی

کیونکہ مرکز میں نریندر مودی کی زیرقیادت حکومت پر ایک بھی کرپشن کا الزام عائد نہیں کیا گیا ہے۔ امیت شاہ نے یہ سوال اٹھایا کہ آیا قیمتی معدنیات اور قدرتی وسائل کا مناسب طریقہ سے استعمال کیا جارہا ہے۔ پورے علاقہ کاشی کو پلوں، پانی اور برقی کی سہولت سے آراستہ کیا گیا ہے، جبکہ معدنیات کی دولت سے مالامال علاقہ سونے بھدرا چار ریاستوں مدھیہ پردیش، چھتیس گڑھ، جھارکھنڈ اور بہار کی سرحدوں کو جوڑتا ہے۔ انہوں نے چیف منسٹر اکھیلیش یادو کے اس وعدہ کا تذکرہ کیا کہ مایاوتی کے دور حکومت میں کرپشن میں ملوث افراد کے خلاف کیسیس درج کئے جائیں گے۔ اس کے برخلاف 2 لاکھ کروڑ روپئے کے اسکام میں ملوث افراد کو بھی چھوڑ دیا گیا اور مایاوتی کے قریبی لوگوں کے خلاف ایک بھی کیس درج نہیں کیا گیا۔ اگر بہن جی (مایاوتی) اقتدار میں آتی ہیں تو وہ سماج وادی پارٹی کے غنڈوں کا پاس و لحاظ کریں گی۔

اگر سماج وادی پارٹی اقتدار پر دوبارہ آتی ہے تو بہن جی کے بدعنوان ساتھیوں کی سرپرستی کرے گی، لیکن بی جے پی کو اقتدار میں لایا گیا تو غنڈوں اور بدعنوان سیاست دانوں کو بخشا نہیں جائے گا اور انہیں کیفرکردار تک پہنچایا جائے گا۔ یہ الزام عائد کرتے ہوئے کہ جو لوگ اترپردیش جیسی بڑی ریاست میں برسراقتدار آئے ہیں، عوام کی خدمت کرنے کے بجائے کرپشن میں ملوث ہوگئے۔ انہوں نے سرکاری اراضیات پر قبضوں کیلئے اکھیلیش یادو کو موردالزام ٹھہرایا اور یہ وعدہ کیا کہ بی جے پی اقتدار میں آنے پر صرف ایک ماہ میں قبضوں کو برخاست کردیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت کی جانب سے روانہ کئے گئے فنڈس کو لکھنؤ میں چاچا۔ بھتیجہ کی ٹیمس ہضم کر لے رہی ہیں۔ وہ بظاہر شیوپال یادو اور ان کے بھتیجے اکھیلیش یادو کا حوالہ دے رہے تھے۔

TOPPOPULARRECENT