Sunday , June 25 2017
Home / Top Stories / لکھنؤ میں دو دہشت گردوں کا محاصرہ ، انکاؤنٹر جاری

لکھنؤ میں دو دہشت گردوں کا محاصرہ ، انکاؤنٹر جاری

نئی دہلی ۔ /7 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) لکھنؤ میں دولت اسلامیہ کے دو مشتبہ کارکنوں اور انسداد دہشت گردی اسکواڈ کے درمیان فائرنگ کا تبادلہ منگل کی رات دیر گئے تک جاری رہا ۔ مبینہ دہشت گردوں کا تھیار دال دینے سے انکار کے بعد محاصرہ کرلیا گیا ۔ مبینہ طور پر ان میں سے ایک سیفل آج صبح مدھیہ پردیش کی مسافر ٹرین کے بم دھماکے میں ملوث بھی ہے ۔ اے ڈی جی پولیس دلجیت چودھری نے کہا کہ جس مکان میں دہشت گرد زیر محاصرہ تھے اس کی چھت کو ڈرلنگ کرنے کے بعد ہمیں یہ دیکھ کر حیرت ہوئی کہ مکان میں دو دہشت گرد زیرمحاصرہ تھے ۔ جبکہ قبل ازیں صرف ایک ہی دہشت گرد ہونے کا شبہ تھا ۔ مشتبہ دہشت گردوں کو ہتھیار ڈال دینے کیلئے کافی وقت دیا گیا ۔ لیکن انہوں نے انکار کردیا ۔ ہم اب بھی انہیں زندہ گرفتار کرنا چاہتے ہیں ۔ یہ دہشت گردمبینہ طور پر دولت اسلامیہ اور اس کے لٹریچر سے متاثر ہیں ۔ اے بی جی نے کہا کہ کارروائی محدود پیمانے پر کی جارہی ہے اس لئے اس میں کافی وقت لگے گا ۔ اے ٹی ایس نے محکمہ سراغ رسانی کی ٹھوس اطلاعات کے بموجب ٹرین دھماکہ کے مشتبہ سیف ال کو گرفتار کرنے کیلئے ٹھاکرے گنج کی حاجی کالونی کے ایک مکان پر پہونچی تھی ۔ یہ گنجان آباد علاقہ ہے ۔ ان کی گرفتاری کو یقینی بنانے کی کوشش کی جارہی تھی لیکن ناکام رہی ۔ سینئر پولیس عہدیداروں کی موجودگی میں کارروائی جاری ہے ۔ متصلہ مکانات تخلیہ کروادیا گیا ہے ۔ شب بسری آلا ت ، امبولینس گاڑیاں ، فائر بریگیڈ اور دیگر انتظامات مکمل کرلئے گئے ہیں ۔ مرکزی وبزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے یو پی کے ڈی جی پی جاوید احمد سے ٹیلیفون پر بات چیت کی ۔ جنہوں نے تفصیلات سے واقف کروایا ۔ملک گیر سطح پر مرکزی حکومت کی جانب سے سخت چوکسی کے اقدامات کی ہدایت جاری کردی گئی ہے ۔ کیونکہ دہشت گردوں کا کوئی نظریہ نہیں ہوتا اور وہ جہاں مقابلے گڑبڑ کرنے کی کوشش کرتے ہیں ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT