Saturday , September 23 2017
Home / ہندوستان / لیفٹننٹ گورنر دہلی انتظامی اُمور کے سربراہ: ہائیکورٹ

لیفٹننٹ گورنر دہلی انتظامی اُمور کے سربراہ: ہائیکورٹ

نئی دہلی 4 اگسٹ (سیاست ڈاٹ کام) اروند کجریوال حکومت کو آج اُس وقت زبردست دھکہ پہونچا جب دہلی ہائیکورٹ نے یہ فیصلہ سنایا کہ قومی دارالحکومت دہلی بدستور مرکزی زیرانتظام علاقہ رہے گا اور انتظامی سربراہ لیفٹننٹ گورنر رہیں گے۔ عدالت نے عام آدمی پارٹی حکومت کا یہ استدلال کہ گورنر وزرائے کونسل کے مشورے پر عمل کرنے کے پابند ہیں، ناقابل قبول قرار دیا۔ دہلی میں انتظامی کنٹرول کے لئے لیفٹننٹ جنرل نجیب جنگ اور کجریوال کے درمیان جاری سرد جنگ کے بعد یہ فیصلہ سامنے آیا۔ چیف منسٹر جی روہنی اور جسٹس جین ناتھ پر مشتمل بنچ نے عام آدمی حکومت کی درخواست مسترد کردی جس میں مرکز کے 21 مئی 2015 ء کو جاری کردہ اعلامیہ کو چیلنج کیا گیا تھا جس کے تحت لیفٹننٹ جنرل کو قومی دارالحکومت میں عہدیداران کے تقرر کے مکمل اختیارات تفویض کئے گئے ہیں۔ عدالت نے کجریوال حکومت کے گزشتہ سال اقتدار پر واپسی کے بعد جاری کردہ کئی اعلامیوں کو کالعدم قرار دیا ہے اور کہاکہ یہ سب غیر قانونی ہے کیوں کہ انھیں لیفٹننٹ گورنر کی رضامندی کے بغیر جاری کیا گیا ہے۔ حکومت دہلی کے ترجمان نے کہاکہ دہلی ہائیکورٹ کے فیصلہ کا اگر ابتدائی تجزیہ کیا جائے تو اِس میں دستور کے مطابق جو اختیارات دیئے گئے ہیں اُن کی اہمیت کم کی جارہی ہے۔ عام آدمی پارٹی لیڈر راگھو چڈھا نے ہائیکورٹ کے اِس فیصلہ کو سپریم کورٹ میں چیلنج کیا جائے گا۔ اُنھوں نے کہاکہ جمہوری طور پر منتخبہ حکومت کی اہمیت کم نہیں کی جاسکتی۔ یہ برتری کے لئے لڑائی نہیں بلکہ جمہوریت کے لئے ہے۔ انھوں نے کہاکہ دہلی میں عام آدمی پارٹی کے اقتدار سنبھالنے کے بعد سے مرکز کی مسلسل یہ کوشش رہی ہے کہ کرپشن کے واقعات میں کسی بھی طرح کی کارروائی نہ کی جائے۔ انتظامی اُمور پر لیفٹننٹ گورنر اور کجریوال کی سرد جنگ جاری ہے۔

TOPPOPULARRECENT