Friday , September 22 2017
Home / ہندوستان / لیگوپراجکٹ کیا ہے؟

لیگوپراجکٹ کیا ہے؟

نئی دہلی ۔3اپریل ( سیاست ڈاٹ کام) ہندوستان اور امریکہ نے ایک عصری لیگو ( لیزر انٹرفیرومیٹرگراویٹشنل ویو آبزرویٹری ) پراجکٹ ملک میں قائم کرنے کے یادداشت مفاہمت پر دستخط کئے ہیں ۔ تقریباً ایک ماہ قبل جاذبہ امواج کی دریافت ہوئی تھی ‘ معاہدہ مفاہمت پر قومی سائنس فاؤنڈیشن امریکہ اور ہندوستان کے محکمہ برائے ایٹمی توانائی اور محکمہ برائے سائنس و ٹکنالوجی نے دستخط کئے ۔ لیگو بڑے پیمانے کا طبیعیاتی تجربہ ہے اور اس کی رصدگاہ جاذبہ امواج کا پتہ چلائے گی ۔اس پراجکٹ میں شامل سائنسداں اور تجزیہ کے ذریعہ حاصل ہونے والی معلومات جاذبہ امواج فلکیات کیلئے انتہائی کارآمد ثابت ہوں گی ۔ اس یادداشت مفاہمت کا اہتمام لیگو سائنٹیفک تعاون کے تحت کیا گیا ہے ۔ اس میں دنیا بھر کے 900سے زیادہ سائنسداں اور 44ہزار کارآمد [email protected] Home Users شامل ہیں۔ لیگو کو مالیہ قومی سائنس فاؤنڈیشن امریکہ کی جانب سے فراہم کیا جاتا ہے اور برطانوی سائنس و ٹکنالوجی تنصیبات کونسل کا اس میں اہم حصہ ہے ۔ میکس پلینک سوسائٹی جرمنی اور آسٹریلیا کی تحقیقی کونسل ‘ [email protected] رضاکارانہ طور پر کمپیوٹنگ پراجکٹ کیلئے فنڈ تقسیم کرتی ہے ۔ چنانچہ اس مالیہ کے ذریعہ لیگو کا سراغ حاصل کرنے والے اپنی معلومات اور تحقیق میں تمام ارکان کو شریک کرتے ہیں ۔ اس رصدگاہ کے ذریعہ مسلسل جاذبہ امواج کے ذرائع کا پتہ چلایا جاتا ہے ۔یہ پراجکٹ سرکاری طور پر 19فبروری 2005ء کو امریکی طبیعیاتی سوسائٹی کی پوری دنیا کے سال برائے سائنس 2005ء تقریب کیلئے ایک دین تھی ۔ اس میں برقی توانائی ‘ رضاکارانہ طور پر تقسیم کار کمپیوٹنگ کے ذریعہ حاصل کی جاتی ہے اور کمپیوٹر کے ذریعہ ہی اس کا تجزیہ کیا جاتا ہے ۔ معلومات کا بڑا ذخیرہ حاصل کر کے اسے محفوظ کیا جاتا ہے ۔

حکومت ہند نے گذشتہ ماہ اصولی اعتبار سے لیگو انڈیا پراجکٹ قائم کرنے کی منظوری دے دی تھی ۔ یہ رصدگاہ جدید ترین جاذبہ اموات رصدگاہ برائے ہند ہوگی جس سے امریکہ کی لیگو لیباریٹری تعاون کرے گی ۔جس کا اہتمام کیلٹک اور ایم آئی ٹی کرتے ہیں ۔ یہ پراجکٹ بے مثال مواقع سائنسدانوں اور انجنیئروں کو فراہم کرے گا اور وہ جاذبہ امواج کے بارے میں مزید تفصیلی تحقیقات کرسکیں گے اور عالمی قیادت اس نئے فلکیاتی محاذ پر کرسکیں گے ۔ ایک اجلاس میں اس پر تبادلہ خیال کیا گیا کہ یہ رصدگاہ ہندوستان میں کس مقام پر قائم کی جائے ‘ چنانچہ 10اپریل کو یہ رصدگاہ لیگو انڈیا قائم ہوجائے گی ۔ اس کے ذریعہ قابل لحاظ مواقع برائے انتہائی ترقی یافتہ ٹکنالوجی حاصل ہوں گے ۔ ہندوستانی صنعت کو بھی کئی مواقع حاصل ہوں گے اور شعبہ صنعت 8کلومیٹر طویل شعاعی ٹیوب انتہائیبلند سطحی خلاء میں روانہ کرسکے گی ۔ اس سے بارش کے بارے میں بالکل درست پیش قیاسی ممکن ہوگی ۔ سائنسدانوں کو جو مشینیں دی جائیں گی اُن کی اولین جھلکیاں جاذبہ امواج کی ہوں گی اور انتہائی ترقی یافتہ پتہ چلانے والے آلات پہلی بار اس لیباریٹری میں تعیناتی حرکات درج کرسکیں گے ۔دونوں رصدگاہیں امریکہ میں زیر زمین قائم ہیں اور انہیں لیزر انٹرفیرومیٹر گراویٹشنل ویو آبررویٹری یا مختصر طورپر لیگو کہا جاتا ہے ۔ ایک لیباریٹری ہینفورگ واشنگٹن اور دوسری لیونگ اسٹون لویزیانا امریکہ میں قائم ہے ۔

TOPPOPULARRECENT