Thursday , October 19 2017
Home / شہر کی خبریں / مئی تا اکٹوبر سینکڑوں مخدوش عمارتیں منہدم ، کئی ناجائز قبضہ جات برخاست

مئی تا اکٹوبر سینکڑوں مخدوش عمارتیں منہدم ، کئی ناجائز قبضہ جات برخاست

15 عمارتوں کا تخلیہ ، تالاب کے شکم میں تعمیر کردہ مکانات کے خلاف کارروائی ، جی ایچ ایم سی
حیدرآباد۔13اکٹوبر(سیاست نیوز) بلدیہ کی جانب سے مئی 2017 سے اب تک 185 مخدوش عماررتوں کو منہدم کیا گیا ہے اور ان میں کچھ غیر مجاز تعمیرات بھی شامل ہیں جو منہدم کی گئی ہیں۔مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عہدیداروں نے بتایا کہ رامنتا پور کے علاقہ میں 109 ایسی عمارتوں کی نشاندہی کی گئی جو تالاب کے شکم میں بنائی گئی ہیں۔ عہدیداروں نے بتایا کہ 16 ایسے رہائشی اپارٹمنٹ ہیں جو شکم میں تعمیر کئے گئے ہیں اور ان کے علاوہ 93مکانات ہیں جو متاثر ہیں اور ان کے متاثرہونے کی بنیادی وجہ ان کی تعمیر تالاب کے شکم میں کی گئی ہے۔حیدرآباد میٹروپولیٹین ڈیولپمنٹ اتھاریٹی اور مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد دونوں ہی اس مسئلہ سے نمٹنے کے سلسلہ میں کوئی قطعی نظریہ اختیار کرنے کے موقف میں نہیں ہیں۔ دونوں ہی اداروں کے عہدیداروں کا کہنا ہے کہ رامنتا پور اور اطراف کے علاقوں میں جو صورتحال ہوئی ہے وہ پیدا چیروو کے شکم کے سبب ہے لیکن ان عمارتوں کو ہٹایا جانا مشکل ہی نہیں بلکہ ناممکن ہے کیونکہ یہ عمارتیں پٹہ لینڈ پر تعمیر کی گئی ہیںاور ان کے تخلیہ کے لئے ان مکانات کے مالکین کو معاوضہ کی ادائیگی لازمی ہوگی اور مجموعی اعتبار سے جو تخمینہ لگایا گیا ہے اس کے مطابق ان 109 عمارتوں کو خالی کروانے کے لئے کم از کم 200 کروڑ کا معاوضہ ادا کرنا پڑے گا جو کہ دونوں اداروں کے لئے انتہائی مشکل ہے۔مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عہدیداروں نے بتایا کہ شہر میں اب تک 150 مقامات سے ناجائز قبضہ جات کو برخواست کیا گیا ہے جن میں 25نالوں پر کئے گئے قبضہ جات تھے۔علاوہ ازیں 203 غیر مجاز تعمیرات کو برخواست کیا گیا ہے اور 15 مخدوش عمارتوںکے مکمل انہدام کی کاروائی کیلئے ان کا تخلیہ کروادیا گیا ہے ۔مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عہدیداروں کا کہناہے کہ بہت جلد شعبہ ٹاؤن پلاننگ کی جانب سے شہر میں بڑے پیمانے پر مزید کاروائی کا آغاز کیا جائے گا اور اس کاروائی کے دوران مزید مخدوش عمارتوں اور غیر مجاز تعمیرات کو برخواست کرنے کے متعلق نوٹس کی اجرائی عمل میں لائی جائے گی۔کمشنر جی ایچ ایم سی ڈاکٹر بی جناردھن ریڈی نے شعبہ ٹاؤن پلاننگ کو ہدایت جاری کی ہے کہ وہ جن عمارتوں کو نوٹس جاری گئی ہیں انہیں قطعی نوٹس کی اجرائی کے اقدامات کرے تاکہ جاریہ موسم کے فوری بعد ان عمارتوں کے انہدام کو یقینی بنایا جاسکے۔ اس کے علاوہ انہوں نے دونوں شہروں میں جن 15مخدوش جائیدادوں کا تخلیہ کروایا جا چکا ہے ان جائیدادوں کو فوری منہدم کرنے کے اقدامات کی ہدایت جاری کی ہے اور کہا گیا ہے کہ تالابوں کے شکم میں کی گئی تعمیرات اور جاری تمام تعمیرات کو فوری روکنے کے علاوہ ان کے خلاف کاروائی کی جائے۔دونوں شہروں میں گذشتہ چند یوم سے جاری بارش کے دوران جو صورتحال پیدا ہوئی ہے اس سے رہائشی علاقوں کو بچانے کے لئے کئے جانے والے اقدامات کے سلسلہ میں بلدیہ کی جانب سے علحدہ ٹاسک فورس کی تشکیل کے سلسلہ میں غور کیا جا رہاہے ۔

TOPPOPULARRECENT