Monday , September 25 2017
Home / کھیل کی خبریں / مائیکل فلپس نے اولمپکس کا 2ہزار سال قدیم ریکارڈ توڑ دیا

مائیکل فلپس نے اولمپکس کا 2ہزار سال قدیم ریکارڈ توڑ دیا

ریو ڈی جینیرو۔12 اگست (سیاست ڈاٹ کام ) امریکہ کے عالمی ریکارڈ یافتہ ایتھلیٹ مائیکل فلپس نے اولمپک میں نئی تاریخ رقم کرتے ہوئے 2 ہزار سال سے زائد قدیم  ریکارڈ توڑ دیا اور ریو اولمپکس میں چوتھا گولڈ میڈل اپنے نام کر لیا۔امریکی پیراک نے 200 میٹر کے انفرادی مقابلے کے فائنل میں فتح حاصل کر کے اپنے کیریئر کا 22 واں گولڈ میڈل جیتا جبکہ یہ ریو میں ان کا چوتھا گولڈ میڈل ہے۔اس فتح کے ساتھ ہی انہوں نے تاریخ کے سب سے بہترین ایتھلیٹ سمجھے جانے والے قدیم یونان لیونیڈز آف رہوڈز کو بھی پیچھے چھوڑ دیا۔وہ اس کامیابی کے ساتھ ہی لگاتار چار اولمپک گیمز میں ایک ہی مقابلہ متواتر  جیتنے والے تاریخ کے پہلے پیراک بن گئے ہیں۔اس سے قبل انہوں نے 2004، 2008 اور 2012 کے اولمپکس میں بھی اس  مقابلے میں کامیابی حاصل کی تھی۔ اس مقابلے میں انہوں نے جاپان کو کوسوکے ہگینو اور چین کے وینگ شْن کو شکست دی۔اولمپک ویب سائٹ کے مطابق 2 ہزار 160 سال قبل 164 تا 152 قبل مسیح کے دوران لیونیڈز نے 12 فتوحات حاصل کی تھیں اور انہیں ان کے عہد کے بڑے ایتھلیٹ بھی ہیرو مانتے تھے۔تاہم اب مائیکل فلپس نے نئی تاریخ رقم کرتے ہوئے اپنا نام بھی اس فہرست میں درج کروا لیا ہے۔اولمپک کی تاریخ صدیوں قدیم  ہے جب آٹھویں صدی قبل مسیح میں پہلی مرتبہ اولمپک گیمز کا انعقاد قدیم یونان میں کیا گیا اور تقریباً 1200 سال تک چوتھی صدی عیسوی تک جاری رہے۔جدید اولمپک کی تاریخ زیادہ قدیم  نہیں اور 1894 میں اولمپک کمیٹی کے قیام کے بعد 1896 میں پہلی مرتبہ جدید اولمپک گیمز کا انعقاد کیا گیا تھا۔اب تک مائیکل اپنے کیریئر میں جملہ 26 میڈلس جیت چکے ہیں اور  100 میٹر کے مقابلے میں شرکت کر کے ممکنہ طور پر وہ میڈلز کی تعداد 27 تک پہنچا دیں گے۔31 سالہ پیراک ریو اولمپکس کے بعد سبکدوش ہو جائیں گے لیکن ان کی فارم اور عزم کو دیکھتے ہوئے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ وہ ریو میں اپنا پانچواں گولڈ میڈل بھی جیت لیں گے۔

TOPPOPULARRECENT