Thursday , September 21 2017
Home / ہندوستان / مابعد جی ایس ٹی ٹیکس ڈھانچہ میں توسیع ، سروے

مابعد جی ایس ٹی ٹیکس ڈھانچہ میں توسیع ، سروے

نئی دہلی 11 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) معاشی سروے میں آج کہا گیا ہے کہ جی ایس ٹی کے نفاذ سے یہ ابتدائی اشارے ملے ہیں کہ ٹیکس ڈھانچہ میں توسیع ہوئی ہے اور اس بات پر زور دیا جا رہا ہے کہ تعلیم ‘ برقی ‘ رئیل اسٹیٹ اور الکوحل کو بھی نئے ٹیکس نظام کے تحت لایا جانا چاہئے ۔ معاشی مشیر اعلی اروند سبرامنین کے تیار کردہ معاشی سروے کے دوسرے حصے میں تعلیم کو جی ایس ٹی سے باہر رکھنے پر تنقید کی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ سونے اور زیورات پر صرف تین فیصد ٹیکس عائد کیا گیا ہے حالانکہ یہ اشیا بہت امیر لوگ ہی استعمال کرتے ہیں۔ اس سروے کو آج لوک سبھا میں پیش کیا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ اگر مرکز اور ریاستوں میں ایک مشترکہ ڈاٹا سیٹ رکھا جاتا ہے تو جی ایس ٹی کے نفاذ کے بعد راست محاصل کی وصولی مزید موثر ہوسکتی ہے ۔ سروے میں کہا گیا ہے کہ جو ابتدائی اشارے مابعد جی ایس ٹی ملے ہیں ان کے مطابق ٹیکس ڈھانچہ میں توسیع ہوئی ہے اس کے علاو ہ یہ امید بھی پیدا ہوئی ہے کہ ٹیکس ڈھانچہ میں آئندہ وقت میں مزید توسیع ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ پہلے سے موجود 71 لاکھ اکسائز ‘ سرویس ٹیکس اور ویاٹ ادا کرنے والے جی ایس ٹی نظام کا حصہ بن گئے ہیں اس کے علاوہ مزید نئے 15 لاکھ ادارے بھی اب نئے ٹیکس نظام کا حصہ بن چکے ہیں ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT