Saturday , July 22 2017
Home / شہر کی خبریں / مارچ 2018 تک تمام ہیڈ پوسٹ آفسوں پر پاسپورٹ سیوا کیندر کا قیام

مارچ 2018 تک تمام ہیڈ پوسٹ آفسوں پر پاسپورٹ سیوا کیندر کا قیام

وزارت خارجہ کے اشتراک سے پاسپورٹس کی اجرائی ، سکریٹری محکمہ ڈاک بی وی سدھاکر کی پریس کانفرنس
حیدرآباد ۔ 24 ۔ اپریل : ( سیاست نیوز ) : سکریٹری محکمہ پوسٹس بی وی سدھاکر نے کہا کہ مارچ 2018 تک تمام ہیڈ پوسٹ آفسوں میں پاسپورٹ سیوا کیندر قائم کئے جائیں گے ۔ اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے بی وی سدھاکر نے کہا کہ سابق میں پوسٹ آفسوں سے پاسپورٹ درخواستوں کی صرف پروسیسنگ ہوا کرتی تھی اب پاسپورٹ آفسوں سے وزارت خارجہ کے اشتراک سے پاسپورٹ جاری بھی کئے جاسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ یہ خدمات ہندوستان بھر میں 25 جنوری سے 42 پوسٹ آفسوں پر شروع کی گئی ہیں ۔ انہوں نے بتایا کہ ان خدمات کو مارچ 2018 تک تمام 811 ہیڈ پوسٹ آفسوں پر شروع کرنے کا منصوبہ ہے ۔ مسٹر سدھاکر نے کہا کہ انڈیا پوسٹ پے منٹ بینک میں توسیع کا بھی منصوبہ ہے اور اس سال اس کی 650 برانچس کھولی جائیں گی ۔ اس بینک کی پہلی دو شاخوں کا جنوری 2017 میں رانچی اور رائے پور میں آغاز ہوا تھا ۔ انہوں نے بتایا کہ ہر ضلع میں اس بینک کی کم از کم ایک برانچ کے قیام کا منصوبہ ہے ۔ ہر برانچ کو ضلع میں تقریبا 1200 تا 1500 پوسٹ آفسوں سے مربوط کیا جائے گا ۔ اس سوال پر کہ آیا مختصر سے وقت میں ایسا کرنا ممکن ہوسکے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ٹکنالوجی کی مدد سے ایسا ہوسکتا ہے ۔ مسٹر سدھاکر نے بتایا کہ فی الحال محکمہ کے 978 اے ٹی ایمس ہیں اور پے منٹ بینک کی جانب سے دوسرے بینکوں سے اشتراک کے ذریعے مزید اے ٹی ایمس قائم کرنے کا منصوبہ ہے ۔ دسمبر 2017 تک محکمہ کے کور سسٹم سافٹ ویر کو مستحکم کیا جائے گا ۔ جس میں کور بینکنگ ، پوسٹل خدمات اور سیونگس بینک بھی شامل ہیں ۔ اس سے محکمہ کو کافی مدد ملے گی ۔ سکریٹری محکمہ ڈاک نے بتایا کہ پے منٹ بینک کی توجہ عوام کو گھروں تک بینکنگ سہولت فراہم کرنے پر ہوگی ۔ محکمہ کی جانب سے ایک سروے کیا گیا تھا جس میں پتہ چلا کہ ڈور اسٹیپ بینکنگ کی بہت ضرورت ہے ۔ اس سرویس کے ذریعے معاشی شمولیت ، راست فوائد منتقلی اور ڈور بینکنگ پر خاص توجہ دی جائے گی ۔ انہوں نے بتایا کہ محکمہ کی جانب سے اسپیڈ پوسٹ خدمات کو بہتر بنانے پر بھی توجہ دی جارہی ہے تاکہ اس کے ذریعے مالیہ وصولی کو بہتر بنایا جاسکے ۔ جاریہ اپریل کے ختم تک ملک کی تمام پوسٹ آفسوں میں اسپیڈ پوسٹ کی سہولت کا آغاز کردیا جائے گا ۔ انڈیا پوسٹ کی جانب سے آئندہ دو برسوں کے دوران مالیہ اور اخراجات کے فرق میں کمی لانے پر توجہ دی جارہی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ محکمہ میں نئے یونیفارم کو بھی لاگو کیا جارہا ہے ۔

Leave a Reply

TOPPOPULARRECENT