Monday , October 23 2017
Home / Top Stories / مالیگاؤں دھماکے مقدمہ : سادھوی پرگیہ کواین آئی اے کی کلین چٹ

مالیگاؤں دھماکے مقدمہ : سادھوی پرگیہ کواین آئی اے کی کلین چٹ

ممبئی ۔ /13 مئی (سیاست ڈاٹ کام) این آئی اے نے اپنا موقف برعکس کرتے ہوئے سادھوی پرگیہ ٹھاکر اور دیگر 5 کے خلاف مالیگاؤں دھماکے مقدمہ میں الزامات سخت گیر قانون مکوکاکے بجائے نرم کردیئے اور دیگر 10 ملزموں بشمول لیفٹننٹ کرنل پرساد شری کان پروہت پر عائد الزامات میں نرمی پیدا کردی ۔ این آئی اے نے کہا کہ تحقیقات کے دوران سادھوی پرگیہ ٹھاکر کے خلاف کافی ثبوت دستیاب نہیں ہوئے ۔ دیگر 5 افراد کے خلاف بھی ثبوت نہیں ہے ۔ فرد جرم جو ان کے خلاف داخل کیا گیا تھا برقرار نہیں رہ سکتا ۔ 7 افراد کو دھماکوں میں ہلاک کردیا گیا تھا جو ماہ رمضان میں /29 ستمبر 2008ء کو مصلیوں کے مسجد سے باہر آتے وقت کئے گئے تھے ۔ مالیگاؤں دھماکے مقدمہ میں کئی موڑ آئے ہیں جنہیں ہندو دائیں بازو کے گروپس سے متعلق افراد کی کارستانی سمجھا جاتا ہے مقدمہ کی تحقیقات ابتداء میں جوائنٹ کمشنر ممبئی اے ٹی ایس ہیمنت کرکرے نے کی تھی جو /26 نومبر کے ممبئی حملے میں ہلاک کردیئے گئے ۔ 2011 ء سے این آئی اے اس کی تحقیقات کررہی ہے ۔

پروہت نے ہتھیاروں اور دھماکو مادوں کیلئے رقم اکٹھا کی

پروہت نے ہندو راشٹرا کیلئے علحدہ دستور کی تجویز رکھی تھی ، این آئی اے کا الزام
ممبئی ، 13 مئی (سیاست ڈاٹ کام) مالیگاؤں بم دھماکہ کیس میں سادھوی پرگیہ ٹھاکر کو کلین چٹ دیتے ہوئے اور اُس کے خلاف تمام الزامات حذف کرتے ہوئے این آئی اے کا کہنا ہے کہ لیفٹننٹ کرنل پرساد شریکانت پروہت نے دیگر ملزمین کے ساتھ کئی اجلاسوں کا اہتمام کیا اور اپنی غیرقانونی سرگرمیوں کیلئے ہتھیاروں اور دھماکو مادوں کے حصول کی خاطر رقم اکٹھا کی تھی۔ قومی تحقیقاتی ادارہ (این آئی اے) نے یہاں خصوصی عدالت کے روبرو اپنی ضمنی چارج شیٹ میں کہا: ’’وہ مجرمانہ سازش کے کلیدی ارکان میں سے ہے۔ ملزم پروہت نے ہندوستان کی مسلح افواج کے برسرخدمت متعین عہدہ دار ہونے کے باوجود 2006ء میں ابھینو بھارت تنظیم تشکیل دی جو سرویس کے قواعد کے مغائر ہے۔‘‘ این آئی اے نے الزام عائد کیا کہ 25-26 جنوری کو خفیہ میٹنگ منعقدہ فریدآباد میں پروہت نے علحدہ زعفرانی پرچم کے ساتھ ہندو راشٹرا کیلئے علحدہ دستور کی تجویز رکھی تھی۔

’’اُس نے ابھینو بھارت کا دستور پڑھا جو اسی نے تیار کیا تھا، حکومت ہند کے خلاف مرکزی ہندو حکومت (آریہ وراٹ) کی تشکیل کے تعلق سے تبادلہ خیال کیا اور اسرائیل اور تھائی لینڈ میں ایسی جلاوطن حکومت تشکیل دینے کا خیال پیش کیا تھا۔‘‘ پروہت نے ہندوؤں پر مسلمانوں کے ’’مظالم‘‘ کا انتقام لینے کے تعلق سے بھی بات کی تھی۔ پروہت کی قیامگاہ سے برآمد آر ڈی ایکس کی بابت این آئی اے نے آرمی کی کورٹ آف انکوائری رپورٹ کا حوالہ دیا جس نے دعویٰ کیا تھا کہ دھماکو مادے اُس کی قیامگاہ پر اے ٹی ایس عہدیداروں نے رکھے جو اُس کے گھر میں جبراً داخل ہوئے تھے۔ این آئی اے نے یہ الزام بھی عائد کیا کہ پروہت نے دیگر ملزمین کے ساتھ مل کر ابھینو بھارت آرگنائزیشن کیلئے خطیر فنڈز اکٹھا کئے اور ان کو تقسیم کرنے کی ہدایت دی تاکہ اُن کی غیرقانونی سرگرمیوں کیلئے اسلحہ اور دھماکو مادے حاصل کئے جائیں۔سادھوی کے رول پر این آئی اے نے کہا کہ اُس کے اور پانچ دیگر کے خلاف معقول ثبوت نہیں ہے۔ چھ این آئی اے نے کہا کہ دھماکہ میں جو موٹرسائیکل استعمال کی گئی وہ کبھی ملزمہ سادھوی نے استعمال کی تھی۔

TOPPOPULARRECENT